کیا اب سب لوگ دودھ کے دھلے ہو گئے ہیں؟ آپ کو بلاگیا تھا دو دن تک عدالت کیوں نہیں آئے؟راولپنڈی میٹروبس سے متعلق کیس میں چیف جسٹس کے ریماکس

کیا اب سب لوگ دودھ کے دھلے ہو گئے ہیں؟ آپ کو بلاگیا تھا دو دن تک عدالت کیوں ...
کیا اب سب لوگ دودھ کے دھلے ہو گئے ہیں؟ آپ کو بلاگیا تھا دو دن تک عدالت کیوں نہیں آئے؟راولپنڈی میٹروبس سے متعلق کیس میں چیف جسٹس کے ریماکس

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) اسلام آبادمیٹروبس سروس پرمشاہدحسین کی درخواست پرسماعت کرتے ہوئے چیف جسٹس آف پاکستان میاں محمد ثاقب نثارنے ریماکس دیئے کہ کیا اب سب لوگ دودھ کے دھلے ہو گئے ہیں؟اور کیا آج بھی آپ کرپشن کے الزام پر قائم ہیں۔چیف جسٹس نے مشاہدحسین سے سوال کیا کہ آپ کو بلاگیا تھا دو دن تک عدالت کیوں نہیں آئے۔

تفصیلات کے مطابق راولپنڈی میٹروبس سے متعلق کیس کی سماعت سپریم کورٹ میں ہوئی ۔سماعت کے دوران چیف جسٹس کا مشاہد حسین سید سے سوال تھا کہ آپ نے میٹروبس پر کرپشن کا الزام لگایا تھا۔کیا آج بھی آپ کرپشن کے الزام پر قائم ہیں؟ جس پر مشاہد حسین سید نے جوا ب دیا کہ میرامسئلہ ماحولیات سے متعلق تھا اورمیں نے سی ڈی اے کے ماسٹرپلان سے متعلق سوالات اٹھائے تھے، اب چونکہ میٹروبس بن چکی ہے لہذااس کیس کونمٹاناہی بہترہے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ میٹروبس ایشواب ختم ہو چکا ہے ،4 سال پہلے میں نے جسٹس تصدق جیلانی کوخط لکھا جس پر چیف جسٹس نے ریماکس دیئے کہ اگر 4 سال پہلے خط لکھاتھا تب بھی آپ دلائل دیں۔ثاقب نثار نے مشاہد حسین سید سے سوال کیا کہ کیا اب سب لوگ دودھ کے دھلے ہو گئے ہیں؟آپ کو بلاگیا تھا دو دن تک عدالت کیوں نہیں آئے ؟چیف جسٹس نے مشاہدحسین کی درخواست غیر موثر قرار دیتے ہوئے نمٹا دی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -