انار کے بیج کھانے سے خاتون ہیپاٹائٹس اے کا شکار ہو گئی، موت ہو گئی کیونکہ۔۔۔۔

انار کے بیج کھانے سے خاتون ہیپاٹائٹس اے کا شکار ہو گئی، موت ہو گئی کیونکہ۔۔۔۔
انار کے بیج کھانے سے خاتون ہیپاٹائٹس اے کا شکار ہو گئی، موت ہو گئی کیونکہ۔۔۔۔

  

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک)ہیپاٹائٹس ایک ایسا موذی مرض ہے جس کے لاحق ہونے کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں، تاہم گزشتہ دنوں آسٹریلیا میں ایک خاتون کی ہیپاٹائٹس اے کی وجہ سے موت واقع ہو گئی اور اسے یہ مرض ایک ایسی چیز سے لاحق ہوا کہ سن کر آپ کے لیے یقین کرنا مشکل ہو جائے گا۔ میل آن لائن کے مطابق آسٹریلوی شہر ایڈیلیڈ کی 64سالہ لیزلے رولٹن نامی خاتون کو ہیپاٹائٹس اے انار کھانے کی وجہ سے ہوا، تاہم یہ تازہ انار نہیں بلکہ انار کے منجمد دانے تھے جو سٹورز میں مختلف کمپنیاں پیکنگ میں فروخت کرتی ہیں۔لیزلے نے کولیس سپرمارکیٹ سے Creative Gourmetکمپنی کا 180گرام کا پیک خریدا تھا۔

رپورٹ کے مطابق جب لیزلے انار کے یہ منجمد دانے کھانے سے کے کچھ دن بعد ہی بیمار پڑ گئی اور گزشتہ دنوں ہسپتال میں اس کا انتقال ہو گیا۔ جب اس کے اہلخانہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اس کی بیماری کی وجہ بتائی توپورے ملک میں ہنگامہ برپا ہو گیا اور کمپنی نے آسٹریلیا بھر سے اپنی یہ پراڈکٹ واپس منگوا لی۔ ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ ’’ممکنہ طور پر کمپنی کی یہ پراڈکٹ ہیپاٹائٹس اے کے وائرس سے آلودہ تھی۔چونکہ ہیپاٹائٹس اے کا وائرس کسی بھی چیز پر 15سے 50دن تک افزائش پا سکتا ہے اور کمپنی اپنی یہ پراڈکٹ 2ماہ پہلے ہی واپس لے چکی ہے چنانچہ اس کے متعلق حتمی طور پر کچھ نہیں کہا جا سکتا۔‘‘ ماہرین نے لوگوں کو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ ’’اپنے فریزرز کو چیک کریں اور اس میں کوئی بھی ہیپاٹائٹس کے وائرس سے متاثرہ چیز موجود ہو تو اسے ضائع کر دیں۔‘‘واضح رہے کہ لیزلے اس پراڈکٹ کی وجہ سے اکیلی اس مرض میں مبتلا نہیں ہوئی بلکہ آسٹریلیا میں 24دیگر افراد بھی سامنے آ چکے ہیں جو اس کی وجہ سے ہیپاٹائٹس اے کا شکار ہو چکے ہیں اور پورے آسٹریلیا میں اس کمپنی کی مصنوعات کے متعلق خوف و ہراس پایا جا رہا ہے۔

مزید :

تعلیم و صحت -