دنیا کے طاقتور ترین لوگوں کے دمیان خفیہ ترین میٹنگ شرو ع ہو گئی ، یہ کہاں اور کس لیے مل رہے ہیں ؟ تفصیلات آپ کو بھی شدید پریشان کر دیں گی

دنیا کے طاقتور ترین لوگوں کے دمیان خفیہ ترین میٹنگ شرو ع ہو گئی ، یہ کہاں اور ...
دنیا کے طاقتور ترین لوگوں کے دمیان خفیہ ترین میٹنگ شرو ع ہو گئی ، یہ کہاں اور کس لیے مل رہے ہیں ؟ تفصیلات آپ کو بھی شدید پریشان کر دیں گی

  

ٹیورن(نیوز ڈیسک)دنیا کے چند طاقتور ترین افراد، جن کے متعلق کہا جاتا ہے کہ وہ کرہ ارض پر بسنے والے اربوں انسانوں کی قسمت کے فیصلے کرتے ہیں، کل ایک بار پھر اپنی انتہائی پر اسرار اور خفیہ میٹنگ ’بلڈر برگ‘ کیلئے جمع ہورہے ہیں۔ رواں سال اس میٹنگ کا انعقاد اٹلی کے شہر ٹیورن میں کیا جا رہا ہے جس میں دنیا کے طاقتور ترین سیاست دان اور مالدار ترین بزنس مین شرکت کر رہے ہیں۔ کل جمعہ کے روز شروع ہونے والی یہ خفیہ میٹنگ اتوار تک جاری رہے گی۔ 

ڈیلی سٹار کے مطابق دنیا کے طاقتور ترین افراد کی اس خفیہ ترین میٹنگ کا انعقاد 1954ء کیا جا رہاہے اور اسے عالمی اشرافیہ کے نیو ورلڈ آرڈر سے منسلک کیا جاتا ہے۔ اس خفیہ کانفرنس کے متعلق ایک سے بڑھ کر ایک پر اسرار کہانی پائی جاتی ہے لیکن اصل حقائق کسی کو بھی معلوم نہیں ہیں۔ کہا جاتا ہے کہ یہ ہماری دنیا کے سیاسی و اقتصادی معاملات کو کنٹرول کرنے والے طاقتور ترین افراد کا گروہ ہے جن کے فیصلوں پر کسی ملک میں جنگ ہوتی ہے تو کسی ملک کا دیوالیہ نکل جاتا ہے ۔ 

ان میٹنگز کا اصل احوال کبھی بھی سامنے نہیں آیا کیونکہ کہا جاتا ہے کہ اس میں شرکت کرنے والوں پر سخت پابندی ہوتی ہے کہ وہ ہر بات کو راز رکھیں گے۔ بڑے بڑے صحافی اور تجزیہ کار بلڈر برگ کو خفیہ عالمی حکومت قرار دیتے ہیں جس کے اشارے دنیا کی سمت کا تعین کرتے ہیں۔ بلڈر برگ آرگنائزرز کا کہنا ہے کہ رواں سال منعقد ہونے والی میٹنگ میں 23ممالک سے 130افراد شرکت کر رہے ہیں۔ ان میں سے کچھ افراد کے نام سامنے آئے ہیں جن میں سابق برطانوی چانسلر اور ایوینگ سٹینڈرڈ کے ایڈیٹر جارج اورسپون، سابق برطانوی وزیر داخلہ ایمبروڈ ، بینک آف انگلینڈ کے گورنر مارک کارنی اور ریان ایئر کے CEOمائیکل او لیری شامل ہیں۔ 

اطلاعات کے مطابق اس سال میٹنگ کی صدارت فرانسیسی بزنس مین ہنری ڈیکیسٹریز کریں گے جو کہ اس خفییہ آرگنائزیشن کی سٹیرنگ کمیٹی کے انچارج بھی ہیں۔ برطانیوی وزیراعظم ٹریزا مے اس میٹنگ میں شرکت نہیں کر رہیں لیکن ان سے پہلے وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون باقاعدگی سے اس میٹنگ میں شرکت کرتے رہے ہیں۔ کہاجا رہا ہے کہ اس سال کی میٹنگ میں امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ کی قسمت کا فیصلہ بھی کیا جائے گا جبکہ مصنوئی ذہانت ، آزادانہ تجارت ، کوانٹم کمپیوٹینگ ، مشرق وسطٰی اور مشرقی یورب میں روس کے بڑھنے ہوئے اثر ورسوخ پر بھی غورو خوض کیا جائے گا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -