عدالت میں ماں باپ نے ایسی منطق پیش کر دی کہ عدالت نے ان سے ان کا بچہ ہی چھین لیا ، ایسا کیا بولا تھا ؟ جانئے

عدالت میں ماں باپ نے ایسی منطق پیش کر دی کہ عدالت نے ان سے ان کا بچہ ہی چھین ...
عدالت میں ماں باپ نے ایسی منطق پیش کر دی کہ عدالت نے ان سے ان کا بچہ ہی چھین لیا ، ایسا کیا بولا تھا ؟ جانئے

  

اوٹاوا(نیوز ڈیسک)کینیڈا میں ایک عیسائی جوڑے کی مذہبی جنونیت ایسی انتہا کو پہنچ گئی کہ عدالت نے ان کے مذہبی نظریات کو ان کی ننھی بچی کیلئے خطرہ قرار دیتے ہوئے انہیں بچی کی پرورش کے حق سے ہی محروم کر دیا ہے۔ 

وینکور سن کے مطابق برٹش کولمبیا سے تعلق رکھنے والے اس جوڑے کے مذہبی خیالات اس قدر شدت پسندی پر مبنی ہیں کہ انہیں سن کر چرچ کے پادری بھی پریشان ہوجاتے ہیں۔ یہ اپنے جنونی مذہبی خیالات کے باعث ڈاکٹروں اور سوشل ورکرز کو بھی اپنی بچی کے پاس آنے کی اجازت نہیں دے رہے تھے ۔ جب انہیں عدالت میں پیش کیا گیا تو یہ بھُس بھرے کھلونا شیر کے ساتھ پر اسرار زبان میں گفتگو کر رہے تھے ۔ ان کا کہناتھا کہ یہ بھُس بھرا شیر ان کے پاس خدا کے پیغامات لاتا ہے ۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ انہیں کسی وکیل کی ضرورت نہیں کیونکہ یہ بھُس بھرا شیر ہی ان کی وکالت کرے گا ، یہی ان کا گواہ ہوگا اور یہی ان کے لیے منصف بھی ہو گا۔ عدالت نے اس جوڑے کی ذہنی حالت پر غور و خوض کے بعد فیصلہ کیا ہے کہ وہ اپنی بچی کیلئے خطرہ ہیں اور اس فیصلے کی روشنی میں بچی کو ایک سرکاری فلاحی مرکز کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -