وہ عظیم شخص جس نے ایمانداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے دس کروڑ ٹھکرا دیئے ، ایسا کیوں کیا ؟ اور کیسے ؟ جانئے

وہ عظیم شخص جس نے ایمانداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے دس کروڑ ٹھکرا دیئے ، ایسا ...
وہ عظیم شخص جس نے ایمانداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے دس کروڑ ٹھکرا دیئے ، ایسا کیوں کیا ؟ اور کیسے ؟ جانئے

  

نیویارک(نیوز ڈیسک)آج کے دور میں نفسا نفسی کا یہ عالم ہے کہ 10روپے کسی ہاتھ آئیں تو وہ چھوڑنے کو تیارنہیں ہوتا مگر امریکی ریاست کینسس سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان نے عجب کام کیا کہ ہاتھ آئے 10کروڑ روپے ایک لمحے کی سوچ بچار کے بغیر جا کر اصل مالک کو واپس کر دیے ۔ 

اے بی سی نیوز کے مطابق یہ قابل تحسین کام سلینا شہر سے تعلق رکھنے والے کا لپاٹل نے کیا جن کے والدین کے ایک دوکان چلاتے ہیں اور وہ خود بھی اس دکان پر کام کرتا ہے۔ کالپاٹل نے بتایا کہ ان کی دکان پر ایک شخص آیا جس کے پاس لاٹری کے تین ٹکٹ تھے۔ وہ چیک کرنا چاہتا تھا کہ اس کا کوئی انعام نکلا ہے یا نہیں ۔ اتفاق سے اس کا ایک ٹکٹ کہیں گرگیا جبکہ دو ٹکٹ اس نے چیک کروائے جن پر کوئی انعام نہیں نکلا تھا۔ اس کے شخص کے جانے کہ کچھ دیر بعد کالپاٹل کو تیسرا ٹکٹ اپنی دکان میں ہی پڑا مل گیا اور جب اس نے اسے چیک کیا تو پتہ چلا کہ یہی فاتح ٹکٹ تھا جس پر 10لاکھ ڈالر (تقریباً 10کروڑ پاکستانی روپے) کا انعام نکلا تھا۔ 

کالپاٹل کیلئے بالکل ممکن تھا کہ وہ اس ٹکٹ کو لاٹری کمپنی کے پاس لے جاتا اور انعام حاصل لیتا کیونکہ اس پر کسی کا نام درج نہیں تھا لیکن اس کی بجائے اس نے ایک ایسا کام کیا کہ جس کا تصور کرنا ناممکن نہیں تو بہت مشکل ضرورہے ۔ وہ فوری طور پر اس شخص کا سراغ لگانے نکل پڑا جو اس کے پاس ٹکٹ چیک کروانے کیلئے لے کر آیا تھا ۔ اس نے قریبی علاقے کا چکر لگا یا لیکن وہ شخص کہیں نظر نہ آیا ۔ وہ اپنی دکان پرواپس آیا لیکن دل کی بے چینی نے اسے بیٹھنے نہ دیا اور وہ پھر سے نکل کھڑا ہوا۔ اس بار ایک جگہ پر اس نے بالآخر اس شخص کو دیکھ ہی لیا جو اس کے پاس ٹکٹ چیک کروانے آیا تھا۔ کالپاٹل نے بتایا کہ ’’میں اس کے پاس پہنچا اور ٹکٹ اسے دیتے ہوئے بتایا کہ وہ 10لاکھ ڈالر جیت چکا ہے۔ اس کا منہ حیرت سے کھلا کا کھلا رہ گیا اور میں دیکھ سکتا تھا کہ بے یقینی اور خوشی کے باعث اسکے ہاتھ کانپ رہے تھے ۔ اسے اس بات پر یقین ہی نہیں آرہی تھا کہ میں نے 10لاکھ ڈالر انعام والا ٹکٹ انہیں واپس کر دیا تھا۔‘‘ 

جب کالپاٹل سے پوچھا گیا کہ اتنی بڑی رقم ہاتھ آنے پر ان کا دل نہیں للچایا تو ان کا کہنا تھا ’’میں اپنی باقی عمر اس پچھتاوے کے ساتھ نہیں گزرنا چاہتا تھا کہ میں نے کسی کا حق ماراہے۔ میں اس بات پر یقین رکھتا ہوں کہ نیک اعمال آپ کیلئے خیر کا باعث بنتے ہیں اور بد اعمال بھیانک خواب بن کر ہمیشہ آپ کا تعاقب کرتے ہیں۔ ‘‘

مزید :

ڈیلی بائیٹس -