مغرب میں آزادی اظہار کا پردہ چاک ہو گیا ،ایک اور بڑے ملک نے برقعے پر پابندی لگا دی ، یہ کونسا ملک ہے ؟ جانئے

مغرب میں آزادی اظہار کا پردہ چاک ہو گیا ،ایک اور بڑے ملک نے برقعے پر پابندی ...
مغرب میں آزادی اظہار کا پردہ چاک ہو گیا ،ایک اور بڑے ملک نے برقعے پر پابندی لگا دی ، یہ کونسا ملک ہے ؟ جانئے

  

اوسلو (نیوز ڈیسک) ساری دنیا کو انسانی حقوق اور مساوات کا درس دینے والے مغربی ممالک کا اصل چہرہ دیکھنا ہو تو یہ دیکھ لیجئے کہ اپنے ہی ہاں بسنے والے مسلمانوں کے ساتھ ان کا رویہ کیسا ہے۔ یورپی ملک ناروے کو بھی دنیا بھر میں تہذیب و اخلاقیات کا چیمپئین قرار دیا جاتا ہے لیکن مسلمانوں کے خلاف اس ملک کا تعصب دیکھئے کہ تمام تعلیمی اداروں میں بُرقعے اور نقاب پر مکمل پابندی عائد کر دی گئی ہے اور پارلیمنٹ نے اس مقصد کے لئے ایک خصوصی قانون بھی پاس کر دیا ہے ۔ اس قانون کے مطابق کسی بھی تعلیمی ادارے میں کسی بھی شخص کو اپنا چہرہ جزوی یا کلی طور پر ڈھانپنے کی اجازت نہیں ہوگی ۔ ’دی لوکل‘ کے مطابق اس قانون کا نفاذ طالبات کے ساتھ ٹیچرز پر بھی ہوگا جبکہ ڈے کیئر سنٹرز میں کام کرنے والی خواتین پر بھی ہوگا۔ 

تین دن پر محیط دو مراحل میں ہونے والی ووٹنگ کے دوران پارلیمنٹ کے اکثریتی ارکان نے اس قانون کے حق میں ووٹ دیا ۔ بائیں بازو کی سوشلسٹ جماعت سے لیکر ریڈ اور گرین پارٹیز تک ہر کوئی نقاب پر پابندی کیلئے متحد نظر آیا ۔ پناہ گزینوں کے خلاف مہم چلانے والی پروگریس پارٹی نے قانونی کی منظوری پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’’یہ بہت ہی اچھی خبر ہے ۔ جب 2003ء میں ہماری جانب سے پہلی بار نقاب اور بُرقعے پر مکمل پابندی کی تجویز دی گئی تھی تو لوگ ہم پر ہنستے تھے ۔ ہمیں خوشی ہے کہ اب سیاسی ماحول بالآخر ہمارے نظریے سے مطابقت اختیار کر چکا ہے۔ ہمیں اُمید ہے کہ آنیو الے وقت میں صرف تعلیمی اداروں میں ہی نہیں بلکہ ہر جگہ نقاب پر پابندی عائد ہو چکی ہوگی۔‘‘

مزید :

بین الاقوامی -