تارکین ِ وطن! واپسی اور مسائل؟

تارکین ِ وطن! واپسی اور مسائل؟

  

دفتر خارجہ کی ترجمان عائشہ فاروقی نے بتایا ہے کہ بیرونی ممالک میں اب تک339 پاکستانی کورونا وبا سے متاثر ہو کر وفات پا چکے اور92 ہزار ایسے تارکین وطن ہیں، جو اپنے مُلک واپسی کے منتظر ہیں،ان کو واپس لانے کے انتظامات کئے جا رہے ہیں۔ترجمان نے ہفتہ وار بریفنگ کے دوران بتایا کہ کورونا سمیت دوسرے امراض سے جاں بحق ہونے والے424 افراد کی میتیں واپس مُلک لائی گئی ہیں۔کورونا کے باعث سعودی عرب میں 20، یو اے ای میں 32، قطر میں دو اور کویت میں ایک پاکستانی نے وفات پائی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ حکومت51ہزار500 سے زیادہ افراد کو اب تک واپس لا چکی ہے، اب تک سعودی عرب میں 54ہزار اور یو اے ای میں 30ہزار پاکستانیوں نے واپسی کے لئے رجسٹریشن کرائی، جبکہ92 ہزار افراد(مجموعی طور پر) واپسی کے منتظر ہیں۔ترجمان دفتر خارجہ نے جو تفصیل بتائی، ایسی اطلاعات اِس سے پہلے بھی ملتی رہی ہیں کہ کورونا وبا نے دُنیا کو بہت متاثر کیا اور اس سے بیرونی ممالک میں کام کرنے والے پاکستانی بھی بری طرح متاثر ہوئے اور مختلف ممالک میں بے روزگار کر دیئے گئے،اور اب یہ سب وطن واپسی چاہتے ہیں کہ اپنے آبائی گھروں میں آ کر وقت گذار سکیں اور نئے روزگار کا اہتمام کریں۔کورونا کی وجہ سے دُنیا بھر کی فضائی اور زمینی سروس معطل ہونے سے یہ سب بیرونی ممالک میں پھنس کر رہ گئے تھے،بعد ازاں کچھ سہولت ہونے کے بعد ان تارکین ِ وطن کو خصوصی پروازوں کے ذریعے واپس لانا شروع کیا گیا اور کئی ہزار واپس آ چکے۔ اب بھی یہ سلسلہ باقاعدہ قواعد و ضوابط کے تحت جاری ہے اور دفتر خارجہ نے بھی واضح کر دیا ہے۔یہ تفصیلی وضاحت قابل ِ قبول اور اچھی ہے، تاہم بیرون مُلک سے ان تارکین ِ وطن کی جو شکایات، اوور چارجز اور تاخیر کے حوالے سے ہیں ان کا نوٹس لے کر ازالہ بھی ضروری ہے کہ یہ سب وہ لوگ ہیں جو کل تک مُلک کو زرمبادلہ بھیجتے اور بڑے محترم تھے،لیکن اب وہ اوور چارجز کی شکایت کر رہے ہیں۔ ایئر لائن کا موقف ہے کہ خصوصی پرواز خالی بھیج کر ان متاثرین کو واپس بلایا جاتا ہے،اِس لئے یکطرفہ کرایہ سے کچھ زیادہ وصول کرنا مجبوری ہے ان کی قرنطینہ اور اخراجات خود ادا کرنے کی شکایت کا ازالہ تو کیا گیا،لیکن ٹیسٹ کے نتیجے سے قبل گھر بھیج دینے والی پالیسی پر ماہرین طب کو اعتراض ہے،اِس لئے وفاقی حکومت کو پورے پیکیج کا ازسر نو جائزہ لینا چاہئے۔

مزید :

رائے -اداریہ -