حکومت نے شوگر مافیا پر بجلیاں گرادیں،بیرسٹر شہزاد اکبر نے چینی کمیشن کے حوالے سے اہم ترین اعلان کردیا

حکومت نے شوگر مافیا پر بجلیاں گرادیں،بیرسٹر شہزاد اکبر نے چینی کمیشن کے ...
حکومت نے شوگر مافیا پر بجلیاں گرادیں،بیرسٹر شہزاد اکبر نے چینی کمیشن کے حوالے سے اہم ترین اعلان کردیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب بیرسٹر مرزا شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ عمران خان کو2018میں مینڈیٹ احتساب کیلئےملا،وزیراعظم نے 7 اہم بڑی سفارشات کی منظوری دی ہے،وزیراعظم کافیصلہ ہے چاہے کوئی شخص کتناہی طاقتورہوجوابدہی کرنی ہوگی،چینی بحران میں سیاسی لوگ بھی فائدےکیلئےملوث ہیں، عمران خان نےوعدہ کیا کہ چینی بحران کی تحقیقات کرائیں گے،رپورٹ بتاتی ہےکہ شوگرانڈسٹری کےلوگ من چاہی زیادتیاں کررہےتھے، شوگرکمیشن کی رپورٹ میں شواہدملےہیں کہ چینی افغانستان ایکسپورٹ کی گئی،چینی بحران کےٹیکس سےمتعلق معاملہ ایف بی آر کو دے رہے ہیں، 9شوگرملز کےبعددیگر ملز  کی بھی تحقیقات ہوں گی،20سے25سال کی سبسڈی کی تحقیقات کیلئےریفرنس دائرکرنےکافیصلہ کیاہے۔

نجی ٹی وی کے مطابق اسلام آباد میں وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے معاون خصوصی برائے احتساب بیرسٹر مرزا شہزاد اکبر نے کہا کہ عمران خان کو2018میں مینڈیٹ احتساب کیلئےملا،وزیراعظم کافیصلہ ہے چاہے کوئی شخص کتناہی طاقتورہوجوابدہی کرنی ہوگی،وزیراعظم نے 7 اہم بڑی سفارشات کی منظوری دے دی ہے، پاکستان کی تاریخ میں خوداحتسابی کی ایسی کوئی مثال نہیں ملتی ،سفارشات میں کہاگیاہےکہ لوگوں سےریکوری ہونی چاہیے،شوگرکی قیمت کوکنٹرول کرنےسےمتعلق بھی سفارشات دی ہیں، عمران خان نےوعدہ کیا کہ چینی بحران کی تحقیقات کرائیں گے،رپورٹ بتاتی ہےکہ شوگرانڈسٹری کےلوگ من چاہی زیادتیاں کررہےتھے، شوگرملزنے اجازت کےبغیراضافی چینی بناکرفراڈ کیا ،شوگرملزنےاضافی چینی پیداکی جسکاریکارڈنہیں اسکی بھی تحقیقات ہوں گی،اضافی چینی بنانےکامعاملہ صوبوں کی اینٹی کرپشن دیکھیں گی،سبسڈی وصول کرنے والی فیکٹریز نےہیرپھیرکی ہےتوتحقیقات ہوں گی،1985سےجنہوں نےچوری کی نیب ان معاملات کی تحقیقات کرے،  5سال کےفارنزک میں سیلزٹیکس فراڈاورانکم ٹیکس کم دینے کےشواہدملےہیں،چینی بحران کےٹیکس سےمتعلق معاملہ ایف بی آر کو دےرہےہیں،ایف بی آرریکوریزکرےاور90 دن میں وفاق کو رپورٹ پیش کرے،شوگرکمیشن کی رپورٹ میں شواہدملےہیں کہ چینی افغانستان ایکسپورٹ کی گئی،چینی افغانستان ایکسپورٹ کے معاملے کی تحقیقات بھی ایف آئی اےکرےگی،ایف آئی اے 90 دن میں کیسز عدالتوں میں جمع کرائے گی ۔

بیرسٹر شہزاد اکبر نے کہا کہ کارٹیلائیزیشن میں گروپ بناکرعوام کو لوٹا جاتا ہے،مسابقتی کمیشن کودیکھناہےکارٹیلائیزیشن نہ ہو، اضافی چینی بنانے کامعاملہ صوبوں کی اینٹی کرپشن دیکھیں گی،حماداظہرکی سربراہی میں کمیٹی چینی کی قیمت کم کرنےکےاقدامات کرے گی،سبسڈی وصول کرنےوالی فیکٹریز نےہیرپھیرکی ہےتوتحقیقات ہوں گی،20سے25سال کی سبسڈی کی تحقیقات کیلئےریفرنس دائرکرنےکافیصلہ کیاہے،29 ارب روپے کی سبسڈی کا معاملہ نیب کو بھیجا جارہا ہے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -