"رحمان ملک کے ڈرائیور نے مجھے کپڑے پہننے میں مدد دی " سنتھیا رچی نے ریپ کے واقعے کی مزید تفصیلات بتادیں

"رحمان ملک کے ڈرائیور نے مجھے کپڑے پہننے میں مدد دی " سنتھیا رچی نے ریپ کے ...

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان میں مقیم امریکی خاتون بلاگر سنتھیا ڈی رچی کا کہنا ہے کہ 2011 میں اس وقت کے وزیر داخلہ رحمان ملک نے منسٹرز انکلیو میں ان کا اپنے گھر پر ریپ کیا۔

نجی ٹی وی ہم نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سنتھیا ڈی رچی نے کہا کہ جس وقت اسامہ بن لادن کی ہلاکت کا واقعہ پیش آیا تو پاکستان اور امریکہ کے تعلقات انتہائی کشیدہ تھے جس کی وجہ سے انہیں 2 سال کے ورک ویزہ کے حصول کیلئے وزیر داخلہ کی مدد کی ضرورت تھی۔  ان کی رحمان ملک سے پہچان  وزیر صحت کے ذریعے ہوئی تھی۔

سنتھیا رچی کے مطابق انہیں رحمان ملک نے ویزا کے بارے میں بات کرنے کیلئے منسٹرز انکلیو میں بلایا ،  وہ پاکستان میں نئی نئی آئی تھیں اس لیے انہیں پتا نہیں تھا کہ یہ گھر ہے یا دفتر ہے۔  جب وہ رحمان ملک کے گھر پہنچیں تو انہیں پھولوں کا گلدستہ اور سام سنگ کا مہنگا موبائل فون گفٹ دیا گیا۔

مجھے پھولوں کا گلدستہ پیش کیے جانے پر بہت حیرت ہوئی،  انہوں نے مجھے ڈرنک پیش کیا، اس دن میں نے شلوار قمیض پہن رکھی تھی ، انہوں نے مجھے بیٹھنے کا بولا اور کہا کہ تمہارے لیے ایک تحفہ ہے، مجھے سمجھ نہیں آئی کہ اس تحفے کا میرے ویزا سے کیا لینا دینا ہے۔ہماری ملاقات کے دوران ہی میرا سر چکرانا شروع ہوگیا جس کے بعد مجھے اتنا یاد ہے کہ میں ان کے بیڈ پر تھی۔ جب میں واپس آرہی تھی تواس وقت بھی میرا سر چکرا رہا تھا، ان کے ڈرائیور نے مجھے کپڑے پہننے میں مدد گی اور اس نے مجھے اپنے گھر چھوڑا۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -