رحمان ملک نے سنتھیا رچی کو بذریعہ ڈاک ایسی چیز بھجوادی کہ گیم ہی الٹ گئی

رحمان ملک نے سنتھیا رچی کو بذریعہ ڈاک ایسی چیز بھجوادی کہ گیم ہی الٹ گئی
رحمان ملک نے سنتھیا رچی کو بذریعہ ڈاک ایسی چیز بھجوادی کہ گیم ہی الٹ گئی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور سابق وزیر داخلہ سینیٹر رحمان ملک کے وکلاء نے امریکی خاتون سنتیھیا رچی کو پچاس کروڑ ہرجانے کا نوٹس بذریعہ ٹی سی ایس بھیجوا دیا ہے جبکہ سینیٹر رحمان ملک نے اپنے قانونی نوٹس میں سنتھیا رچی کے لگائے گئے الزامات کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیکر سختی سے تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ لڑائی محترمہ شہید بینظیر بھٹو کی تکریم کی لڑائی ہے جو کہ نہ صرف میری بلکہ پوری قوم کی قائد ہے،محترمہ بینظیر بھٹو شہید اور میرے کردار کشی کے پیچھے کون سے عناصر ہیں وقت آنے پر بے نقاب کرونگا۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹر رحمان ملک نے امریکی خاتون سنتھیا رچی کو شرمناک الزامات لگانے پر 50 کروڑ ہرجانے کا نوٹس بجھواتے ہوئے من گھڑت الزامات کی سختی سے تردید کی ہے اور کہا ہے کہ میرا ضمیر اور میرا دامن صاف ہے، جب میرے خلاف کچھ نہیں ملا تو دشمن گھٹیاترین الزامات پر اتر آئے،مجھے مسلسل جیل بھیجوانے و قتل کی دھمکیاں مل رہی ہیں،ان عناصر کو ان کا ماضی یاد دلاونگا کہ رہتی دنیا تک یاد رہے،نہ میں کبھی کسی کے دباو میں آیا اور نہ کبھی آونگا۔سینیٹر رحمان ملک نے کہا کہ 

میرا سنتھیا نامی امریکی خاتون سے کوئی ذاتی جھگڑا نہیں وہ ایک دوست ملک کی شہری ہے،وقت بتائے گا کہ اس نے پاکستان کے امیج کو بہتر بنانے میں کیا کردار ادا کیا؟۔

دوسری طرف سینیٹر رحمان ملک کے ترجمان ریاض علی طوری نے کہا ہے کہ امریکی خاتون نے من گھڑت، بےبنیاد اور نازیبا الزامات لگا کر سینیٹر رحمان ملک کی ساکھ مجروح کی،امریکی خاتون نے سب سے پہلے محترمہ بینظیر بھٹو شہید کیخلاف نازیبا الزامات لگاکر پیپلز پارٹی سمیت ہر پاکستانی کو مجروح کیا،سینیٹر رحمان ملک نے بطور چئیرمین سینیٹ قائمہ کمیٹی داخلہ سنتھیا رچی کے محترمہ بینظیر بھٹو شہید کیخلاف الزامات پر نوٹس لیا،سنتھیا رچی نے نوٹس لینے کے ردعمل میں سینیٹر رحمان ملک کیخلاف الزامات کا سلسلہ شروع کیا۔انہوں نےکہا کہ سنتھیا رچی نے پہلے ردعمل میں رحمان ملک کو بطور وزیرِداخلہ غیر قانونی پی او سی جاری کرنے کا الزام لگایا،سنتھیا رچی کے الزام کو رد کرتے ہوئے نادرا نے تردید جاری کیا کہ کوئی غیر قانونی پی او سی جاری نہیں ہوا ہے،اس الزام میں ناکامی پر سنتھیا رچی نے سینیٹر رحمان ملک پر ریپ کا نازیبا الزام لگایا۔

ریاض علی طوری کا کہنا تھا کہ سنتھیا رچی سینیٹر رحمان ملک سے انکے آفس وزارت داخلہ میں ایک بار اسوقت کے وزیر اعظم خان سواتی کی بیٹی کے ہمراہ ملی تھی،سنتھیا رچی نے اعظم خان سواتی کے ریفرنس سے اپنے ویزے میں توسیع کی درخواست لیکر آئی تھی،سنتھیا رچی کی درخواست کو اسوقت کےسیکرٹری داخلہ کومزید کاروائی کیلئے بھیجا تھا،مجوزہ قوانین کے تحت سنتھیا رچی کو ویزے میں توسیع کی گئی تھی جو کہ پہلے سے پاکستانی سفارتخانے نے جاری کیا تھا۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -