پنجاب میں کورونا کے غیر تصدیق شدہ مریضوں کی تعدا د دو کروڑ ہونے کا امکان ہے:پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن نے تشویشناک دعویٰ کردیا

پنجاب میں کورونا کے غیر تصدیق شدہ مریضوں کی تعدا د دو کروڑ ہونے کا امکان ...
پنجاب میں کورونا کے غیر تصدیق شدہ مریضوں کی تعدا د دو کروڑ ہونے کا امکان ہے:پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن نے تشویشناک دعویٰ کردیا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن لاہور نے دعویٰ کیا ہے کہ صرف لاہور میں  پینتیس لاکھ  سے زائد اورپورے پنجاب میں دو کروڑ  مریض ہونے کا امکان ہے، ہماری ٹیسٹنگ کپیسٹی کم ہے ، اس لیے ہمیں نتائج بھی کم مل رہے ہیں۔ 

نجی نیوز چینل ہم نیوز کے مطابق پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن لاہور کے صدر ڈاکٹر صاحبزادہ سید مسعود نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت مہلک وبا میں مبتلا مریضوں اور بیماری کے متعلق حقائق چھپانے کے بجائے حفاظتی اقدامات کو یقینی بنائے، کورونا سے ڈاکٹروں کی اموات ہورہی ہیں، ہسپتالوں میں ڈاکٹرز کیلئے جگہ نہیں رہی، لاہور کے ہسپتالوں میں ماسک تک نہیں،  لاک ڈائون کھول دیا گیا، یہ ایسے ہی تھا کہ جیسے عصر کے وقت روزہ توڑدیا، دوبارہ روزہ تو نہیں رکھا جاسکتا، کچھ اقدامات ہوسکتے یہں، لاک ڈائون میں نرمی کے بعد کورونا تیزی سے پھیل رہا ہے ، کورونا سے نمٹنے کے لیے سہولیات بھی ناکافی ہیں۔ویڈیو دیکھئے 

انہوں نے کہا کہ اسپتالوں کے کورونا وارڈز میں وبا سے بچنے کے لیے کیے گئے انتظامات ناکافی ہیں، کورونا وارڈز میں کام کرنے والے ڈاکٹروں کے لیے ہر ہفتے بعد مناسب قرنطینہ کا اہتمام کیاجائے۔ان کا کہنا تھا کہ حکومت کی ناقص حکمت عملی کی وجہ سےکورونا وبا پھیلی، حکومت نے ابتدا سے ہی کورونا پر قابو پانے کے لیے مناسب حکمت عملی نہیں اپنائی۔

انہوں نے مزید کہا کہ کورونا ایک سنجیدہ مسئلہ ہے، اسے سنجیدگی سے لینا چاہیے، کورونا سے نمٹنے کے لیے قائم کیے گئے فیلڈ اسپتالوں میں بھی مناسب سہولتیں موجود نہیں ہیں۔ڈاکٹر مسعود سعید نے بتایا کہ پنجاب میں کورونا مریضوں کا علاج کرنے والے ڈاکٹروں کو اضافی تنخواہ نہیں مل رہی، ہیلتھ پروٹیکشن بل کو بھی کچھ عناصر سیاست کی نذر کر رہے ہیں۔

مزید :

قومی -