حکومت کی 3سالہ کارکردگی نے 22کروڑ عوام کو غم سے نڈھال کر دیا: سراج الحق 

حکومت کی 3سالہ کارکردگی نے 22کروڑ عوام کو غم سے نڈھال کر دیا: سراج الحق 

  

 اسلام آباد(این این آئی)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ حکومت کے ایک ہزار دنوں میں صرف پروپیگنڈا فعال باقی تمام ادارے زوال کا شکار رہے۔حکومت کی تین سالہ کارکردگی نے 22کروڑ عوام کو غم سے نڈھال کر دیا۔حکومت کے جھوٹے وعدوں دعووں سے ہر طرف مایوسیاں پھیل چکی ہیں۔ایک کروڑ نوکریاں، پچاس لاکھ گھر، ایک ارب درخت باقی اعلانات کی طرح جھوٹے پروپیگنڈا تک محدود رہے۔کچھ پالیسیاں نہیں، ملک کا معاشی نظام مکمل طور پر آئی ایم ایف کے قبضے میں ہے۔مزدور، کسان، سرکاری، غیر سرکاری ملازمین اور چھوٹے تاجر سب ہی پریشان ہیں۔ملک مافیاز کے رحم وکرم پر ہے۔آڈیٹر جنرل کا آڈٹ رپورٹ سے انکار کا مطلب پوری دال ہی کالی ہے۔موجودہ نظام مکمل ناکام ہو چکا،اسلامی نظام تمام مسائل کا حل ہے،جماعت اسلامی کی جدوجہد اس ملک میں نظام کی تبدیلی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں تربیت گاہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔سراج الحق نے کہا کہ آئی ایم ایف زرعی ملک کے کسانوں کو مکمل طور پر تباہ کرنا چاہتا ہے۔حکومت کھاد، خام تیل، زرعی آلات، بجلی پر مزید ٹیکس کی بجائے سبسڈی کا اعلان کرتے ہوئے ظالمانہ شرائط سے انکار کا اعلان کرے۔پہلے ہی گنا، گندم، چاول، کپاس پیدا کرنے والے ملک کی عوام خود ان چیزوں سے محروم ہے -مہنگائی نے عام آدمی کی کمر توڑ دی غربت، بے روزگاری میں ریکارڈ اضافہ حکومت کی نا اہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے،اگر گندم کی ریکارڈ فصل ہوئی ہے تو آٹا 90روپے کلو کیوں ہے؟۔کرونا فنڈ کے بارہ سو ارب روپے کے پیکج کی تفصیلات سامنے لائی جائیں تاکہ اس حوالے سے اصل صورت حال کا اندازہ ہو سکے۔آڈیٹر جنرل کی طرف سے آڈٹ رپورٹ میں تاخیر کچھ تو غلط ہے، کی طرف اشارہ ہے۔

سراج الحق 

مزید :

صفحہ آخر -