حکومتی ارکان اسمبلی کو 3کھرب 50ارب کے ریکارڈ ترقیاتی فنڈز دینے کا انکشاف

    حکومتی ارکان اسمبلی کو 3کھرب 50ارب کے ریکارڈ ترقیاتی فنڈز دینے کا انکشاف

  

 لاہور(آئی این پی) ملکی تاریخ میں پہلی بار حکومتی ارکان اسمبلی کو آئندہ مالی سال کے دوران 3 کھرب 50 ارب کے ترقیاتی فنڈز دینے کا انکشاف‘ فنڈ صرف پی ٹی آئی کے حکومتی اور اتحادی ارکان کو ملے گا، حکومت نے فنڈز کو خفیہ رکھنے کیلئے بجٹ میں ضلعی ترقیاتی پیکج کا نام دیدیا۔ذرائع کے مطابق تبدیلی سرکار نے ترقیاتی فنڈز کو رشوت قرار دینے پر یوٹرن لے لیا تحریک انصاف کی حکومت نے ارکان اسمبلی کو فنڈز دینے کیلئے سابق حکومتوں کو بھی پیچھے چھوڑ دیا، پنجاب حکومت آئندہ مالی سال کے بجٹ میں 3 کھرب 50 ارب کے منصوبے صرف اپنے حکومتی ارکان اسمبلی کی سفارشات پر مختص کر رہی ہے، جن کی تعداد 4 ہزار سے زائد ہے۔ ذرائع کے مطابق یہ فنڈز آئندہ 3 سال میں حکومتی ارکان اسمبلی کے حلقوں میں خرچ ہوگا، تبدیلی سرکار سڑکوں کی تعمیر کیلئے ایک کھرب 34 ارب کا ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ پیکج دے گی، لاہور کے ارکان اسمبلی کو صرف 7 ارب ملیں گے، پیکج میں ایک کھرب 34 ارب کا فنڈ صرف روڈ سیکٹر کے منصوبوں پر خرچ ہوگا، حلقوں میں 1113 روڈ کی سکیمیں مکمل ہوں گی، جبکہ لاہور کی 25 سڑکوں کو ایک ارب 8 کروڑ 3 سال میں ملیں گے، سب سے زیادہ فنڈز ملتان کے ارکان اسمبلی پر خرچ ہوں گے، انہیں 9 ارب ملیں گے، بہاولپور8 ارب، میانوالی 6 ارب 33 کروڑ، راولپنڈی کو 5 ارب ملیں گے، پیکج صرف حکومتی ارکان اسمبلی کے حلقوں میں سڑکوں کی تعمیر پر خرچ ہوگا، فنڈ مختص کرنے کیلئے تجاویز حکومت کو پیش کردی گئی ہیں۔

ترقیاتی فنڈز

مزید :

صفحہ اول -