فلسطینی مظاہرین پراسرائیلی فائرنگ، شیلنگ، خاتون صحافی پر تشدد، 50زخمی 

فلسطینی مظاہرین پراسرائیلی فائرنگ، شیلنگ، خاتون صحافی پر تشدد، 50زخمی 

  

 بیت المقدس (آئی این پی)مغربی کنارے اور مقبوضہ بیت المقدس میں احتجاج فلسطینیوں پر اسرائیلی فورسز نے دھاوا بول دیا، پولیس کی شیلنگ اور فائرنگ سے 50 کے قریب فلسطینی زخمی ہو گئے۔مقبوضہ بیت المقدس میں پرامن دوڑ کی کوریج کرنے والی الجزیرہ کی صحافی کو اسرائیلی فورسز نے تشدد کا نشانہ بنایا، بعد میں انہیں شیخ جراح کے علاقے میں کوریج نہ کرنے کی شرط پر رہا کر دیا گیا۔مغربی کنارے میں غیر قانونی اسرائیلی آباد کاری کے خلاف اور بے دخل فلسطینیوں کے حق میں احتجاج کیا گیا۔پر امن احتجاج کرنے والے فلسطینیوں پر اسرائیلی فورسز نے فائرنگ اور شیلنگ کی، جس سے 27 فلسطینی زخمی ہو گئے۔مقبوضہ بیت المقدس کے علاقے شیخ جراح میں بے دخل فلسطینیوں سے اظہارِ یک جہتی کے لیے پرامن دوڑ منعقد کی گئی۔اسرائیلی فورسز نے دوڑ پر بھی دھاوا بول کر 23 فلسطینیوں کو زخمی کر دیا۔دوڑ کی کوریج کرنے والی الجزیرہ کی خاتون صحافی کو اسرائیلی فورسز نے زد و کوب کیا، کیمرہ توڑ دیا اور انہیں حراست میں بھی لے لیا۔)اقوام متحدہ کی فلسطینی مہاجرین کے لیے امدادی ایجنسی انروا نے غزہ میں تعینات اپنے ڈائریکٹر کو اسرائیل کے حالیہ حملوں کی تحسین پر ملنے والی دھمکیوں کے بعد واپس بلا لیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق انروا کے ڈائریکٹرمتھیاس شمیل نے ایک انٹرویو میں کہا کہ اسرائیلی فوج نے غزہ میں گذشتہ ماہ اپنے اہداف کو ٹھیک ٹھیک نشانہ بنایا تھا۔ان کے اس بیان کے خلاف غزہ میں انروا کے صدردفاتر کے سامنے فلسطینیوں نے ایک بڑا احتجاجی مظاہرہ کیا۔انروا کا کہناتھاکہ اس کے ڈائریکٹر کو سنگین نتائج کی دھمکیاں دی گئی ہیں فلسطینی تنظیم حماس کے غزہ میں پولیٹیکل بیورو کے سربراہ یحیی السنوار نے کہاہے کہ مئی کے دوران اسرائیلی فوج کی غزہ کی پٹی پربمباری میں جماعت کے 90 کارکن ہلاک اور 3 فیصد سرنگیں تباہ ہوئی ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق اپنے ایک خطاب میں اسرائیلی ریاست کے دارالحکومت تل ابیب کو حملوں کا نشانہ بنانے کی ایک بار پھر دھمکی دی۔ان کا کہنا تھا کہ حماس نے تل ابیب کو نشانہ بنانے کا سمندر میں کامیاب تجربہ کیا تھا مگر اس تجربے پرعملی کارروائی نہیں کی گئی۔مصر فلسطینیوں اور اسرائیلی فریقین کے مابین قیدیوں کے تبادلے کی ڈیل کرانے اور معاہدے کے معاشی و سیاسی پہلوؤں پرکام کررہا ہے۔ذرائع نے کہا کہ حماس نے قیدیوں کے تبادلے کے معاہدے میں مروان برغوثی کو ابتدائی فہرست میں شامل کرنے کی درخواست کی تھی جبکہ اسرائیل کو اس بارے میں تحفظات ہیں۔

فلسطین

مزید :

صفحہ اول -