صوبہ بھر میں بورڈ امتحانات سے لازمی مضامین کے اخراج کا فیصلہ نامنظور 

صوبہ بھر میں بورڈ امتحانات سے لازمی مضامین کے اخراج کا فیصلہ نامنظور 

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ) تنظیم اساتذہ پاکستان خیبر پختونخواہ نے صوبہ بھر میں بورڈ امتحانات سے لازمی مضامین کے اخراج کا ٖفیصلہ نامنظور قرار دیا ہے اس سلسلے میں تنظیم اساتذہ پاکستان صوبہ خیبر پختونخواہ کے صوبائی جنرل سیکرٹری ڈاکٹر محمد ناصر نے کہا ہے کہ گذشتہ دنوں وفاقی وزیر تعلیم نے کورونا وبا کی وجہ سے تعلیمی اداروں کی بندش کے حوالے سے بات کی اور کہا ہے کہ 2021میں انٹرمیڈیٹ بورڈ کے امتحانات میں طلبہ لازمی مضامین میں امتحان نہیں دیں گے جن میں اسلامیات لازمی، مطالعہ پاکستان، اردو اور انگریزی جیسے مضامین شامل ہیں انہوں نے کہا کہ ہم حکومت کہ اس فیصلے کو یکسر مسترد کرتے ہیں کیوں کہ آئین پاکستان کے آرٹیکل نمبر 31کی شق 1اور 2کے تحت ریاست کا یہ فرض بنتا ہے کہ وہ مسلمانان پاکستان کو انفرادی و اجتماعی طور پر اپنی زندگی دین اسلام کے بنیادی تصورات کے مطابق ڈھالنے کے اقدامات کریں اسی طر انہیں قران و سنت کے معنی و مفہوم سمجھنے کے قابل بنائے، ریاست قران و سنت کی تعلیمات اور اسلامیات کو لازمی بنائے گی مطالعہ پاکستان گریجویشن تک لازمی ہے کیونکہ اس میں تاریخ، تحریک پاکستان، مشاہیر پاکستان جیسے اہم مو ضوعات شامل ہیں اردو جیسے اہم مضمون میں علامہ اقبال، الطاف حسین حالی اور شبلی نعمانی جیسے اہم لوگوں کی نظمیں اور مضامین شامل ہیں انہوں نے مزید کہا کہ انگریزی میں بعض اہم دینی اور ملی شخصیات کے متعلق مضامین شامل ہیں اور ان مضامین کے اخراج سے طلبا دین اسلام اور مشاہیر پاکستان اوراسلامی تہذیب و تمدن کے موضوعات سے بے خبر ہو جائیں گے جو اس ملک کی دستوری خلاف ورزی ہو گی 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -