2018سے اب تک 12ٹرین حادثے، مرتضی وہاب وزیر اعظم پر برس پڑے

2018سے اب تک 12ٹرین حادثے، مرتضی وہاب وزیر اعظم پر برس پڑے
2018سے اب تک 12ٹرین حادثے، مرتضی وہاب وزیر اعظم پر برس پڑے

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن ) ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب نے وفاقی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے دور حکومت میں2018سے ا ب تک 12ٹرین حادثے ہوچکے ہیں مگر وزیر اعظم عمران خان نے ان حادثوں پر ایک بار بھی وزیر ریلوے کے خلاف کارروائی نہیں کی۔سندھ کے عوام نے پاکستان تحریک انصاف کو بار بار مسترد کیا۔

سندھ اسمبلی کے آڈیٹوریم میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ اس وقت ایک نہیں دو پاکستان ہیں، ایک پی ٹی آئی کا اور ایک سندھ کا، وفاق نے ثابت کیا ہے کہ ان کی سندھ میں کوئی دلچسپی نہیں ہے،وزیر اعلیٰ سندھ نے وفاقی پی ایس ڈی پی میں غیر منصفانہ تقسیم کو آشکار کیا اور اپنا تحریری احتجاج ریکارڈ کرایا۔وزیرا علیٰ سندھ نے شواہد اور تفصیلات کے ساتھ سندھ سے ہونے والی زیادتی ثابت کی، ہمیں امید تھی کہ وزیر اعظم آئین کے مطابق فیصلہ کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ سندھ 70فیصد ریونیو دیتا ہے مگر صوبے میں کل سکیمیں چھ ہیں، نئے وفاقی بجٹ میں ہم نے17سکیموں کی تجویز دی ہے مگر سندھ ان کی ترجیح نہیں ہے۔حکومتوں میں بات چیت زبانی نہیں دستاویزات کے ذریعے ہوتی ہے،ہم نے سات ارب روپے وفاق کو دئیے مگر انہوں نے اپنے حصے کے پیسے نہیں دیئے۔

 انہوں نے کہا کہ موٹروے بنا نا وفاق کی ذمہ داری ہے صوبے کی نہیں،عام آدمی سمجھتا ہے کہ پنجاب کا موٹروے سندھ سے اچھا ہے ،وفاق پنجا ب میں موٹروے اپنے پیسوں سے بناتا ہے مگر سندھ میں نہیں،ہائی وے بھی وفاق کا ہے مگر انہوں نے نہیں بنایا۔وزیر اعلیٰ سندھ نے 50فیصد فنڈز کی تجویز دی مگر بجائے اس کے کہ وہ فنڈز کھتے انہوں نے پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کا فیصلہ کیا۔کیا آئین کے مطابق یہ غیر جانبدار تقسیم ہے؟

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -