انسٹیٹیوٹ فارپالیسی ریفارمز کے زیراہتمام آزاد و غیر جانبدار تھنک ٹینک کا قیام

انسٹیٹیوٹ فارپالیسی ریفارمز کے زیراہتمام آزاد و غیر جانبدار تھنک ٹینک کا ...

لاہور(کامرس رپورٹر)انسٹیٹیوٹ فارپالیسی ریفارمز کے زیراہتمام گزشتہ روز ایوان اقبال کمپلیکس میں ایک نئے آزاد و غیر جانبدار تھنک ٹینک کا قیام عمل میں آیا جس کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر اشرف حیات مقرر کئے گئے ہیں جبکہ سابق وزیر ہارون اختر خان اور ماہر معاشیات خالدہ غوث کو ڈائریکٹرزنامزد کیا گیا۔تھنک ٹینک میں بطور ایڈوائزر ڈاکٹر عطاءالرحمن،عبداللہ حسین ہارون،لیفٹیننٹ جنرل (ر) سکندر افضل،سلمان اکرم راجہ،عبداللہ یوسف،شکیل درانی،منور بصیر احمد،تسنیم نورانی،ڈاکٹر اقرار احمد خان،ڈاکٹر منظور احمد اور ڈاکٹر عابد سلہری کو شامل کیا گیا ہے۔اس موقع پر سابق وزیر خزانہ نے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے جولائی 2013ءتا دسمبر 2013ءتک کی حکومت کی اقتصادی کارکردگی کا جائزہ پیش کیا جس میں اس بات کو تسلیم کیا گیا کہ حکومت نے دہشت گردی،توانائی اور معیشت میں اچھے اقدامات کئے لیکن بدقسمتی سے پاکستان کی معیشت اس سے خاطر خواہ فائدہ نہ اٹھا سکی۔

ڈاکٹر حفیظ پاشا نے بتایا کہ آئی ایم ایف سے کئے گئے معاہدے کے مطابق حکومت اپنا سالانہ مالیاتی خسارہ جی ڈی پی کے تناسب سے 2.2فیصد تک رکھنے میں کامیاب رہی ہے تاہم بجٹ میں دیئے گئے ٹیکس اہداف حاصل کرنے مشکل ہوں گے۔انہوں نے بتایا کہ رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں پانچ فیصد اقتصادی ترقی ہوئی تاہم سال کے اختتام تک ترقی کی شرح چار فیصد تک رہنے کا امکان ہے ۔انہوں نے بتایا کہ پاکستان کو آئی ایم ایف سے آئندہ ملنے والی 55کروڑ ڈالر کی قسط بڑی اہمیت کی حامل ہو گی جس کے لئے حکومت کو بھرپور کوشش کرنی چاہئے ورنہ زرمبادلہ کے ذخائر متاثر ہو سکتے ہیں کیونکہ اس وقت پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر ایک ماہ کی درآمدات کے برابر ہیں لہٰذا حکومت کو چاہئے کہ وہ آئندہ آنے والے مہینوں میں زرمبادلہ کے ذخائر کو بڑھانے کی کوشش کرے ورنہ اقتصادی ترقی متاثر ہو سکتی ہے ۔

مزید : کامرس