پاکستان کے قبائلی علاقوں سے القاعدہ کی سر گرمیاں جاری ہیں،امریکی جنرل

پاکستان کے قبائلی علاقوں سے القاعدہ کی سر گرمیاں جاری ہیں،امریکی جنرل

                             واشنگٹن(آئی اےن پی )امریکی سینٹرل کمانڈ کے سربراہ جنرل لائیڈ آسٹن نے دعویٰ کیا ہے کہ القاعدہ پاکستان کے قبائلی علاقوں سے اپنی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہے،کشمیر کے مسئلے پر پاک بھارت کشیدگی علاقائی استحکام کیلئے خطرہ ہے۔جمعرات کوسینٹ کام کے سربراہ جنرل لائیڈ آسٹن نے ایوان نمائندگان کی آرمڈ سروسز کمیٹی کے سامنے اپنے بیان میں کہا کہ افغانستان اور پاکستان میں القاعدہ پر مسلسل دباو کا نتیجہ تنظیم کے ارکان کی ایسے علاقوں کی طرف پیش قدمی کی صورت میں نکلا ہے جہاں خطرات کم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ القاعدہ پاکستان کے قبائلی علاقوں اور کسی حد تک مشرقی افغانستان سے اپنی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہے۔ سینٹ کام کے سربراہ نے کہا کہ وسیع تر سیکیورٹی تعاون ، تربیتی سپورٹ اور کولیشن سپورٹ فنڈ کے تحت ادائیگیوں کے نتیجے میں عسکریت پسندوں کے خلاف پاکستان کی کارروائیوں کی صلاحیت میں اضافہ ہوا ہے۔ جنرل لائیڈ آسٹن نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان دیرینہ کشیدگی بھی علاقائی استحکام کے لیے خطرہ ہے کیونکہ دونوں ممالک کی فوج کا بڑا حصہ سرحدوں اور کشمیر میں لائن آف کنٹرول پر ہے

 امریکی جنرل

مزید : علاقائی