فوج کو مذاکرات میں نہ گھسیٹاجائے ، خواہش ہے کہ جمہوریت چلے : خورشید شاہ

فوج کو مذاکرات میں نہ گھسیٹاجائے ، خواہش ہے کہ جمہوریت چلے : خورشید شاہ
فوج کو مذاکرات میں نہ گھسیٹاجائے ، خواہش ہے کہ جمہوریت چلے : خورشید شاہ

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خورشیدشاہ نے کہاہے کہ وہ چاہتے ہیں کہ جمہوریت چلے لیکن اسے ان کی کمزوری نہ سمجھا جائے، وہ مذاکرات کے مخالف نہیں تاہم چاہتے ہیں کہ فوج کو اس میں نہ گھسیٹا جائے ، مذاکرا ت ناکام ہوگئے تو الزام فوج پر آئے گا۔قومی اسمبلی اجلاس میں نکتہ اعتراض پر بات کرتے ہوئے قائد حزب اختلاف خورشیدشاہ نے کہا کہ وہ مذاکرات کے حامی ہیں لیکن فوج کو اس میں نہ گھسایا جائے۔ چوہدری نثار کے بیان پر افسوس کاا ظہارکرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ کیا وزیرداخلہ دہشت گردوں کو بچارہے ہیں ؟ ملک کا بیڑہ غرق آمروں نے کیا، اسی لئے چاہتے ہیں کہ جمہوریت چلے،لیکن اسے ان کی کمزوری نہ سمجھا جائے، عوام کی جانیں لینے والوں کو محب وطن کہا جارہا ہے ۔وفاقی وزیر سعد رفیق نے کہا کہ فوج کے مذاکراتی کمیٹی میں شامل ہونے کا حتمی فیصلہ نہیں ہوا، یہ ایک تجویز ہے،فوج آئین کے مطابق کردارادا کرے گی ،انہوں نے کہا کہ خورشید شاہ مذاکرات کی حمایت اور بلاول بھٹو مخالفت کریں تو کیا کیا جائے۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں