شہداء ختم نبوت نے ایثار وقربانی کی ایک نئی تاریخ رقم کی،قاری جمیل اختر

شہداء ختم نبوت نے ایثار وقربانی کی ایک نئی تاریخ رقم کی،قاری جمیل اختر

لاہور (پ ر)شمع ختم نبوت کے پروانوں نے 1953ء کی تحریک ختم نبوت میں اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کر کے اسلام کے بنیا دی عقیدہ ختم نبوت کا تحفظ کیا،اور مملکت خدادپاکستان کو قادیانیوں کی سازشوں سے بچایاان خیالات کا اظہار عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت لاہور کے مرکزی رہنما ؤ ں مولانا قاری جمیل الرحمن اختر،مولانا سید ضیا ء الحسن ،مولانا قاری علیم الدین شاکر،مولانا محبوب الحسن طاہر،مولانا عبدالنعیم،مولانا خالد محمودنے خطبات جمعہ میں 1953ء کی تحریک ختم نبوت کے شہداء کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کیا ۔

۔

۔

علماء کرام نے کہا کہ مارچ1953ء کے شہداء ختم نبوت نے ایثار وقربانی ایک نئی تاریخ رقم کی اور پاکستان سمیت تمام عالم اسلام کو قادیانیوں کی سازشوں سے بچایا۔شہداء نے صرف اور صرف محمد عربی ﷺ کی عزت و حرمت کے لیے جام شہادت نوش کیا ۔عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت ،شہداء ختم نبوت وارث اورامت مسلمہ ترجمان جماعت ہے جو کہ پوری دنیا میںآئین اور قانوں کے مطابق قادیانیت کا تعاقب کر رہی ہے ۔علماء نے کہا کہ ناموس رسالت کے تحفظ کے لیے ہر مسلمان کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے،اکابرین امت اور تمام دینی اور مذہبی جماعتوں کی ذمہ داری بنتی ہے کہ تحفظ ختم نبوت کے لیے مؤثر کردار ادا کریں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1