محکموں میں دو فیصد معذور کوٹے کے تحت بھرتی افراد کی تفصیلات طلب

محکموں میں دو فیصد معذور کوٹے کے تحت بھرتی افراد کی تفصیلات طلب

لاہور (نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے وفاقی اور سرکاری محکموں میں دو فیصد معذور کوٹے کے تحت بھرتی افراد کی تفصیلات طلب کرتے ہوئے پنجاب حکومت سے نابینا افراد کے معاملے پر بھی رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کر دی۔ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے دائر درخواست پر سماعت شروع کی تو اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ آئین کے تحت وفاقی اور صوبائی محکموں میں معذور افراد کو دو فیصد کوٹہ مختص ہے ، اس کے باوجود سرکاری محکموں میں دو فیصد کوٹے پر عملدرآمد نہیں کیا جا رہا ، درخواست میں کہا گیا ہے کہ چند ماہ قبل بھی نابینا افراد اپنے حقوق کیلئے سڑکوں پر آئے تھے تاہم انہیں آئینی دینے کی بجائے پولیس نے انہیں تشدد کا نشانہ بنایا اور اب دوبارہ نابینا افراد دو فیصد کوٹے پر عملدرآمد کرانے اور اپنی ملازمتوں کو مستقل کرانے کے لئے سڑکوں پر احتجاج کر رہے ہیں تاہم ان کی کوئی شنوائی نہیں ہو رہی ، درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ وفاقی اور صوبائی محکموں میں معذور افراد کے دو فیصد کوٹے پر عملدرآمد کیا جائے اور نابینا افراد کا معاملہ بھی حکم کرنے کا حکم دیا جائے، پنجاب حکومت کی طرف سے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل انوار حسین نے عدالت کو بتایا کہ صوبے کے اکثر محکموں کی تفصیلات عدالت میں جمع کرا دی گئی ہیں جبکہ دیگر محکموں کی تفصیلات بھی جلد جمع کرا دی جائیں گی،عدالت نے وفاقی اور سرکاری محکموں میں دو فیصد معذور کوٹے کے تحت بھرتی افراد کی تفصیلات طلب کرتے ہوئے پنجاب حکومت سے نابینا افراد کے معاملے پر بھی رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کر دی، عدالت نے مزید کارروائی 13مارچ تک ملتوی کر دی۔

معذور کوٹہ

مزید : صفحہ آخر