پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں خواتین کے تحفظ کے حوالے سے سیمینار کا انعقاد

پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں خواتین کے تحفظ کے حوالے سے سیمینار کا انعقاد

لاہور( نامہ نگار خصوصی)پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں خواتین کے تحفظ اور ان میں شعور بیدار کرنے کے حوالے سے سیمینار کا انعقاد کیا گیا، ملک میں ترقی کی خاطرخواتین کے تحفظ کے لئے سخت قانون سازی کی ضرورت ہے، جسٹس ریٹائرڈ ناصرہ جاوید اقبال، چیئرپرسن پنجاب کمیشن برائے خواتین سمیت دیگر شرکاء کا سیمینار سے خطاب کیا۔پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں خواتین کے حقوق کے لئے کام کرنے والی این جی اوز وائٹ ربن اور انٹرنیشنل الرٹ کے اشتراک سے عالمی یوم خواتین کے حوالے سے سیمینار کا اہتمام کیا گیاتھا ، سیمینار میں پنجاب جوڈیشل اکیڈمی کے ڈی جی خورشید رضوی، جسٹس ریٹائرڈ ناصرہ جاوید اقبال ، پنجاب کمیشن برائے خواتین کی چیئرپرسن فوزیہ وقار، بیرسٹر نتالیہ کمال ، اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل پنجاب انوار حسین ، عمران خان ایڈووکیٹ ، انٹرنیشنل الرٹ این جی او کے کنسلٹنٹ حسین کامران بشیر ایڈووکیٹ، وائٹ ربن این جی اوکے چیف ایگزیکٹو آفیسر عمر آفتاب سمیت دیگر شرکاء نے شرکت کی، شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے جسٹس ریٹائرڈ ناصرہ جاوید اقبال نے کہا کہ خواتین معاشرے کا اہم حصہ ہیں تاہم انہیں آج بھی تشدد جیسے مسائل کا سامنا ہے ۔چیئرپرسن پنجاب کمیشن برائے خواتین فوزیہ وقار نے کہا ہے کہ خواتین کے تحفظ کیلئے معاشرے میں شعور پیدا کرنے اور سخت قانون سازی کی ضرورت ہے ، خواتین کے ساتھ آج بھی امتیازی سلوک کیا جا تا ہے، بیرسٹر نتالیہ کمال نے کہا کہ پاکستان کی ترقی خواتین کے تحفظ سے مشروط ہے، آئین خواتین کو آزادی اور تحفظ کی ضمانت دیتا ہے، خواتین کے تحفظ کے لئے سخت اور موثر قانون سازی کرنے اور اس بارے خواتین میں شعور پیدا کرنے کی ضرورت ہے ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...