جو کام فرعون اپنی زندگی میں کرتا تھا مرنے کے بعد مغربی خواتین ارد گرد کرنے لگیں

جو کام فرعون اپنی زندگی میں کرتا تھا مرنے کے بعد مغربی خواتین ارد گرد کرنے ...
جو کام فرعون اپنی زندگی میں کرتا تھا مرنے کے بعد مغربی خواتین ارد گرد کرنے لگیں

  

قاہرہ (نیوز ڈیسک) اہرام مصر فرعونوں کی آخری آرام گاہ کے طور پر شہرت رکھتے تھے مگر کچھ یورپی حسیناﺅں نے ان تاریخی مقامات پر فحش ترین حرکات کرکے ان کی شہرت کو داغدار کردیا ہے جس پر مصری حکام سٹ پٹا اٹھے ہیں۔

خبر رساں ادارے ”نیوز ٹائم افریقہ“ کے مطابق انٹرنیٹ پر کچھ ویڈیوز سامنے آئی ہیں جن میں گوری حسینائیں تاریخی اہرام مصر کے گرد مٹر گشت کرتی نظر آتی ہیں۔ ان میں سے ایک خاتون سیاحوں کی موجودگی میں ہی بار بار برہنگی کا مظاہرہ کرتی نظر آتی ہے جبکہ وہ تاریخی اہرام کے بارے میں توہین آمیز باتیں بھی باتیں بھی کرتی ہے۔

کتنی فیصد خواتین کا حمل کیوں ضائع ہو جاتا ہے ؟ تحقیق میں حیرت انگیز انکشاف

ضرور پڑھیں: اسد عمر کی چھٹی

تقریباً 10 منٹ پر مشتمل ویڈیو میں آریتا نامی فحش ماڈل ناصرف شرمناک حرکات کرتی ہے بلکہ مصری تاریخ اور تہذیب کا مذاق بھی اڑاتی ہیں۔ فحش ماڈلز کی جزوی برہنگی بالآخر ایک مکمل فحش فلم میں تبدیل ہوجاتی ہے جس میں اہرام مصر کے مناظر بھی کثرت سے شامل کئے گئے ہیں۔ افسوسناک ویڈیو کے سامنے آنے کے بعد مصری حکام نے تحقیقات شروع کردیں ہیں کہ تاریخی مقامات کو فحش فلم بنانے کے لئے کیسے استعمال کیا گیا۔ فلم کی مرکزی اداکارہ آریتا کا تعلق روس سے بتایا گیا ہے جبکہ باقی اداکاروں کے بارے میں خیال ظاہر کیا گیا ہے کہ ان کا تعلق مغربی ممالک سے ہے۔ شرمناک واقعے کے بارے میں مزید تحقیقات جاری ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس