عالمی ایلچی ہم پر مذاکرات کے لیے زبر دستی کررہے ہیں، شامی اپوزیشن

عالمی ایلچی ہم پر مذاکرات کے لیے زبر دستی کررہے ہیں، شامی اپوزیشن

دمشق(این این آئی)شامی اپوزیشن نے ان کوششوں کو یکسر مسترد کر دیا ہے جن کے تحت اس کے مطابق اپوزیشن پر دباؤ ڈالنے کے لیے جنیوا میں بات چیت کے آئندہ دور میں شرکت کے لیے نئے فریقوں کو دعوت دی جا رہی ہے۔ ساتھ ہی اپوزیشن نے عبوری کمیٹی کے بدلے نئی شامی حکومت کے حوالے سے بات کرنے سے بھی انکار کر دیا ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق شام کے سابق وزیر ثقافت اور مذاکرات کے لیے شامی سپریم کمیٹی کے ترجمان ریاض نعسان نے انٹرویو میں انکشاف کیا کہ شام کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی اسٹیفن ڈی مستورا جنیوا مذاکرات میں نئے فریقوں کو دعوت دے کر اپوزیشن پر دباؤ ڈالنے کی کوشش کر رہے ہیں۔انہوں نے واضح کیا کہ اس اقدام کے ذریعے یہ پیغام پہنچایا جا رہا ہے کہ ایسے دیگر فریق ہیں جو جنیوا میں مذاکرات کے لیے تیار ہیں۔ریاض نعسان نے انتخابات کے حوالے سے ڈی مستورا کے اس موقف پر بھی شدید حیرانی کا اظہار کیا جس میں خصوصی ایلچی نے کہا کہ جنیوا میں یہ معاملہ بھی زیربحث لایا جائے گا۔ نعسان کے مطابق ڈی مستورا کی جانب سے یہ پیش کش مذاکرات میں خلل ڈالے گی اور اس کا نتیجہ اپوزیشن کے جنیوا نہ جانے کی صورت میں نکل سکتا ہے۔ انہوں نے زور دیا کہ اس مرحلے پر اہم ترین امر انتخابات نہیں بلکہ عبوری حکمراں کمیٹی کے معاملے کو زیربحث لانا ہے۔

مزید : عالمی منظر