علما ء عورتوں کے حقوق کے مخالف نہیں بلکہ خواتین کے حقوق کے سب سے بڑی داعی ہیں ،مولانا امجد

علما ء عورتوں کے حقوق کے مخالف نہیں بلکہ خواتین کے حقوق کے سب سے بڑی داعی ہیں ...

لاہور(خبرنگار خصوصی)علما ء عورتوں کے حقوق کے مخالف نہیں بلکہ خواتین کے حقوق کی سب سے بڑی داعی ہیں لیکن نئے نعروں کی بنیاد پر مغربی ثقافت کو لا نے کی اجازت نہیں دی جا سکتی ہے،اسلام عورتوں کے حقوق کا سب سے بڑا محافظ ہے اسلام نے عورت کو ماں ،بیٹی ،بہو اور بیوی کا درجہ دیا ہے یہ باتیں جے یو آئی کے قائم مقام سیکرٹری جنرل مو لا نا محمدامجد خان نے جامعہ عر بیہ تجوید القرآن میں سالانہ تقسیم اسناد اور محفل حمد ونعت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

کا تقریب سے مو لا نا سید زکریا شاہ، مو لا نا قاری محمد صدیق ،الحاج سید سلمان گیلانی ،مو لانا مفتی طاہر ،صاحبزاہ قاری طلحہ ،قاری آصف رشید ،حافظ حذیفہ اور دیگر نے بھی خطاب کیا مو لا نا محمد امجد خان نے کہا کہ عورتوں پر تشدد کی کو ئی مذہبی جماعت یا علماء حامی نہیں بلکہ مخالف ہیں انہوں نے کہا کہ حکومت عورتوں کے حقوق کے بل کو اسلامی نظریاتی کونسل میں لے جانے سے کیوں کترا رہی ہے حا لانکہ یہ آئینی ادارہ ہے جس میں ممتاز اسکالر اور تمام مکاتب فکر کے راہنماء اس میں شامل ہیں انہوں نے کہا کہ خواتین کے حقوق کے نام پر بے حیائی پھیلانے کی اجازت نہیں دیں گے مو لانا محمد امجدخان ،مو لا زکریا شاہ ،قاری صدیق،سید سلمان اور دیگر نے کہا کہ ناموس رسالت ؐ قانون کے تحت تمام انبیا ء کی شان میں گستاخی جرم ہے اور اس کی سزاء موت ہے اس قانون کی مو جو د گی میں کوئی بھی شخص شان رسالت ؐ میں گستاخی نہیں کر سکتا ہے اگر کرے تو اسے قانون کے حوالے کیا جائے گا اس کا بہترین راستہ قانون کا راستہ اختیار کر نا ہے انہوں نے کہا کہ دنیا کی خواہش ہے کہ مسلمان دلوں سے عشق مصطفی ﷺکو نکال دیا جائے لیکن مسلمانوں کے خون کے ایک ایک قطرے کے اندر عشق مصطفی رچا بسا ہے انہوں نے کہا کہ ممتاز قادری نے اپنی کامیاب زندگی گذار کر شہادت کا جام پی کر دنیا سے گئے ہیں انہوں نے کہا کہ ممتاز قادری سچے عاشق رسول ؐ تھے انہوں نے کہا کہ ہمارے تمام مسائل کا حل نظام مصطفی ﷺ کے نفاذ میں ہے جے یو آئی اسی نظام کے عملی نفاذ کے لیئے پر امن جدو جہد کر رہی ہے انہوں نے کہا کہ دنیا خصوصا پا کستان کے ہر مسلمان کے دل ہی میں ہی نہیں بلکہ خون ایک ایک قطرے میں عشق رسالت ؐ ہے اور رہے گا ۔

مزید : میٹروپولیٹن 4