فضل الرحمٰن کی رہائش گاہ پر مذہبی رہنماؤں کا مشاورتی اجلاس ، متحدہ مجلس عمل کو فعال کرنے کا فیصلہ

فضل الرحمٰن کی رہائش گاہ پر مذہبی رہنماؤں کا مشاورتی اجلاس ، متحدہ مجلس عمل ...

 اسلام آباد( اے این این ) ملک کی مختلف مذہبی جماعتوں کے رہنماؤں نے سیکولرازم اور لبرل ازم کا راستہ روکنے کیلئے متحدہ مجلس عمل کو فعال کرنے کا فیصلہ کرلیا ، اتحاد کو 6 جماعتوں کے بجائے مزید وسیع کیا جائے گا،ملی یکجہتی کونسل میں شامل جماعتوں کو بھی سیاسی اتحاد میں شامل کیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کی رہائشگاہ پر مذہبی رہنماؤں کا مشاورتی اجلاس ہوا۔ اجلاس میں شامل علامہ ابوالخیر زبیر اور علامہ عارف واحدی نے ایم ایم اے کی فعالیت کا معاملہ اٹھایا۔ رہنماؤں کا کہنا تھا کہ مذہبی جماعتوں کا اتحاد ہی ملک میں سیکولر ازم اور لبرل ازم کو روک سکتا ہے اوراگر اب بھی متحد نہ ہوئے تو پھر مستقبل میں کسی اتحاد کا امکان نہیں۔ رہنماؤں کا کہنا تھا کہ جماعت اسلامی اور جمعیت علمائے اسلام کے باہمی اختلاف کے باعث پہلے اتحاد کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا تھا۔اجلاس کے دوران مولانا فضل الرحمان، علامہ ابوالخیرمحمد زبیر اور دیگر مذہبی قائدین نے متفقہ طور پر متحدہ مجلس عمل کو دوبارہ فعال کرنے کا فیصلہ کیا۔ذرائع کے مطابق مذہبی جماعتوں کا آئندہ اجلاس 15 مارچ کو جماعت اسلامی کے مرکز منصورہ لاہور میں ہوگا جس میں تمام مذہبی جماعتوں کے سربراہان کو شرکت یقینی بنانے کی ہدایت کی گئی ہے جب کہ اسی دن اجلاس میں ناموس رسالت اور سیکولر ازم مخالف تحریک چلانے کی حکمت عملی بھی طے کی جائے گی۔

مزید : صفحہ اول