مخصوص لابی ملک کو سیکولر ار اور لبرل بنانا چاہتی ہے :سمیع الحق

مخصوص لابی ملک کو سیکولر ار اور لبرل بنانا چاہتی ہے :سمیع الحق

بخشالی (نمائندہ پاکستان)جمعیت علما ء اسلام( س) کے سر براہ اور دارلعلوم حقانیہ کے مہتمم مولانا سمیع الحق نے کہا ہے کہ ایک محصوص لابی ملک کو سیکولر ار اور لبرل بنانا چاہتی ہے جو کہ ان کی خام خیالی ہے ممتاز قادری کی پھانسی اور بدنام زمانہ نام نہاد تحفظ نسواں بل اس کی کڑیاں ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بخشالی میں قاضی حسین احمد کی رہائش گاہ پر میڈ یا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر مرکزی رہنما حافظ حسین احمد شیخ الحدیث جامعہ حقانیہ مولانا عبدالحلیم دیر بابا جی سابق ممبر قومی اسمبلی مولانا حامد الحق حقانی مولانا سید یوسف شاہ مولانا خافظ سلمان الحق ، قاضی حسین احمد سمیت علماء و طلباء کثیر تعداد میں موجود تھے ۔۔ انھوں نے تحفظ حقوق نسواں بل کے حوالے سے کہا کہ اسلام نے مرد کو عورت پر فضیلت دی ہے ۔لیکن تخفظ حقو ق نسواں بل میں غیر ملکی آقاوں کو خوش کر نے کے لیے عو رت اور بیٹی کو مر د پر مسلط کیا گیا ہے ۔ جس سے معاشرئے میں بگا ڑ پید ا ہو گا ۔ اور خاندانی اور خانگی ذند گی تباہ ہو جائے گی ۔اس قانون کی روسے نہ کوئی بیو ی سے پو چھ سکتا ہے اورنہ بیٹی سے بلکہ وہ آزادانہ زندگی بسر کرنے میں خود مختار ہو گی مولانا سمیع الحق نے کہا کہ ممتاز قادری شہید کی پھانسی باغث شرم ہے۔ حکمران نے چند سیکولر اور لادین قوتوں کو خوش کرنے کے لیے عاشق رسولﷺ کو پھانسی پر لٹکا دیا لیکن ممتاز قادری ہمیشہ کے لیے ہمارے دلوں میں زندہ رہیں گے ۔ انھوں نے کہا کہ حکمران اللہ کے غضب سے ڈریں تخفظ نسواں بل قرآن مجید و سنت سمیت ہمارے روایات کے بھی خلاف ہے اسے فی الفور واپس لیا جائے ۔ مولانا سمیع الحق نے کہا کہ موجودہ حالات میں ملک کے اسلامی نظریاتی تشخص کے بچاؤ پر زیا دہ ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔ کہ وہ ان مسائل کے حل کے لیے متفقہ لائحہ عمل اختیار کرے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول