معصوم بچوں کا مستقبل تباہ کرنیوالے غیر قانونی سکولز سیل کئے جائیں:ماہرین تعلیم

معصوم بچوں کا مستقبل تباہ کرنیوالے غیر قانونی سکولز سیل کئے جائیں:ماہرین ...

ملتان ( سٹاف رپورٹر) ماہر تعلیم پروفیسر زین اور شیخ عبدالحمید نے کہا ہے کہ تعلیم کو کاروبار بنا کر معصوم بچوں کا مستقبل تباہ کرنے وا لے نجی سکولز سیل کئے جائیں‘گلی محلوں میں قائم غیر قانونی سکولز کیخلاف ایکشن لیا جائے‘مطلوبہ شرائط پورا اترنے والے سکولز کو فی الفور بند کرایا جائے‘’’پاکستان‘‘ سے گفتگو(بقیہ نمبر10صفحہ12پر )

کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ بہت سنجیدہ مسئلہ ہے جس پر توجہ نہیں دی جارہی ‘حکومت پنجاب شعبہ تعلیم پر اربوں روپے خرچ کررہی ہے مگر نااہل افسران حکومتی مہم کو ناکام بنا رہے ہیں‘غیر قانونی سکولز مالکان بچوں کو پنجاب ایگزامنیشن کمیشن کے تحت پنجم اور ہشتم کے امتحانات نہیں دلاتے اور ہر کلاس میں پاس کرکے بچوں کو اور ان کے والدین کو خوش کر دیتے ہیں‘والدین نہیں جانتے کہ ان کے بچوں کا مستقبل تباہ ہو رہاہے‘ان سکولوں کے بچے جب دوسرے سرکاری یا ’’پیف ‘‘ کے سکول میں داخلے کیلئے جاتے ہیں تو انہیں کچھ آتا جاتا نہیں ہے اور انہیں پچھلی کلاسوں میں داخل ہونا پڑتا ہے جس سے ان کے سال ضائع ہو جاتے ہیں‘بچے جب نہم کے بورڈ کے امتحان میں جاتے ہیں توبھی انہیں کچھ آتا جاتا نہیں ہے اور وہ فیل ہو کر دلبرداشتہ ہو کر تعلیم کو خیر باد کہہ دیتے ہیں‘طلبا وطالبات کے تعلیم چھوڑنے کی ایک بڑی وجہ یہ بھی ہے‘انہوں نے کہا کہ والدین کو بھی چاہئیے کہ وہ جس سکول میں بچوں کو داخل کرا رہے ہیں آیا وہ رجسٹرڈ بھی ہے یا نہیں اور اسکا معیار کیا ہے‘اس کے بعد وہ بچوں کو داخل کرائیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر