ڈرگ انسپکٹرز ماہانہ لیکر خاموش جان بچانے والی ادویات نایاب

ڈرگ انسپکٹرز ماہانہ لیکر خاموش جان بچانے والی ادویات نایاب

ملتان(کرائم رپورٹر) ملتان شہر میں خواب آور ادوایات سمیت جان بچانے والی ادویات نایاب ہوگئیں، جس کے باعث مختلف میڈیکل (بقیہ نمبر23صفحہ12پر )

سٹورز پر ان ادویات کی بلیک میں فروخت عروج پر ہے بتایا جاتا ہے کہ 3روپے کی گولی 10روپے میں فروخت کی جارہی ہے۔چوک کمہاراں والا بوسن روڈ اور گھنٹہ گھر پر واقع نامور میڈیکل سٹورز اس گھنائنے کاروبار میں ملوث ہیں اور دھڑلے سے ادویات بلیک میں فروخت کر رہے ہیں۔جب کہ مذکورہ میڈیکل سٹورز کے خلاف کاروائی کرنے کی بجائے ڈرگ انسپکٹر ز بھاری رشوت لے کر خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہے ہیں۔نامور سائیکالوجسٹ پروفیسر ڈاکٹر اظہر حسین کا کہنا ہے۔ آج کے نوجوان بے روزگاری ،مہنگائی اورغربت کی وجہ سے ذہنی دباؤ کا شکار ہیں۔جس کے باعث بے خوابی عام ہوچکی ہے،بے خوابی دور کرنے کے لیے زیادہ تر مریضوں کو فریزیم گولی کے استعمال کا مشورہ دیا جاتا ہے۔جس کے استعمال میں اضافہ کے باعث میڈیکل سٹور مالکان نے اس کی مصنوعی قلت کر دی ہے،30روپے کا پیکٹ اب 100روپے میں فروخت کیا جارہا ہے۔شہریوں نے ضلعی حکومت سے اس معاملے کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر