آمدن 18لاکھ، خرچ ایک کروڑ، زراعتی فارم ملتان محکمہ کیلئے سفید ہاتھی بن گیا

آمدن 18لاکھ، خرچ ایک کروڑ، زراعتی فارم ملتان محکمہ کیلئے سفید ہاتھی بن گیا

ملتان ( سپیشل رپورٹر) محکمہ زراعت کے زیر کنڑول فصلوں پر تجربات اور شعبہ زراعت کی ترویج کیلئے پرانا شجاعباد روڈ سے ملحقہ 163ایکڑ رقبہ پر زراعتی فارم ملتان کا قیام عمل میں لایا گیا تھا ۔(بقیہ نمبر22صفحہ12پر )

جس کی دیکھ بھال اور دیگر امور پر افسروں سمیت 44ملازمین تعینات کئے گئے ہیں جن کا سالانہ بجٹ ایک کروڑ روپے سے زائد بتایا جاتا ہے تاہم محمد نواز شریف زرعی یونیورسٹی کے قیام کے بعد زراعتی فارم کا ایک سو 30ایکڑ رقبہ زرعی یونیورسٹی کو الاٹ کر دیا گیا ہے جبکہ زراعتی فارم پر صر ف30ایکڑ رقبہ زرعی فارم کیلئے باقی رہ گیا ہے جس میں سے بیشتر رقبہ پر دفاتر اور زراعت افسران کی رہائشی کا لونی پر مشتمل ہے ۔مذکورہ صورتحال کے پیش نظر زراعتی فارم کی سالانہ آمدنی کم ہوکر صرف 18سے 20لاکھ روپے باقی رہ گئی ہے آمدنی کمی اور اخراجات زیادہ ہونے سے مذکورہ فارم محکمہ زراعت کیلئے سفید ہاتھی بن کررہ گیا ہے اس ضمن میں محکمہ زراعت کی سروے ٹیم نے مذکورہ زراعتی فارم کا معائینہ کرنے کے بعد اس کے سرپلس ملازمین کو دیگر شعبوں میں منتقل کرنے کی سفارشات محکمہ زراعت پنجاب کو بھجوا دی ہیں تاکہ فارم کے اخراجات میں فوری طور پر کمی لائی جاسکے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر