گلوبل وارمنگ کی وجہ سے دنیا بھر کے گلیشیئر سکڑ جبکہ پاکستان میں پھیل رہے ہیں

گلوبل وارمنگ کی وجہ سے دنیا بھر کے گلیشیئر سکڑ جبکہ پاکستان میں پھیل رہے ہیں

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) گلوبل وارمنگ کی وجہ سے گزشتہ کئی دہائیوں سے کرہ ارض کا درجہ حرارت بڑھ رہا ہے جس کے نتیجے میں دنیا بھر کے گلیشیئر سکڑ رہے ہیں لیکن پاکستان میں ایک ایسا انوکھا مظہر فطرت ظہور پذیر ہورہا ہے کہ جو عالمی رجحان کے بالکل برعکس ہے۔نیوز سائٹ Wired.co.uk کے مطابق گزشتہ تین دہائیوں کے دوران پاکستان کے شمالی علاقہ جات میں گلیشیئرز کے مشاہدے سے معلوم ہوا ہے کہ یہ سکڑنے کی بجائے پھیل رہے ہیں۔ ناسا کہ لینڈ سیٹ سیٹلائٹ سے بنائی گئی بالتورو گلیشیئر کی تصویر کا مشاہدہ کرنے سے معلوم ہوا ہے کہ اس گلیشیئر کا حجم پہلی کی نسبت زیادہ ہوچکا ہے۔ یہ گلیشیئر قراقرم پہاڑی سلسلے میں واقعے ہے اور اسی سلسلے میں دیگر کئی گلیشیئرز کا حجم بھی بڑھتا ہوا پایا گیا ہے۔یونیورسٹی آف زیورخ کے تحقیق کار کہتے ہیں کہ انہوں نے پاکستانی گلیشیئرز کے 1990ء میں لی گئی تصاویر کا 2013ء کی تصاویر کے ساتھ بتدریج تقابل کیا تو معلوم ہوا کہ یہ بات واقعی درست ہے کہ پاکستانی گلیشیئرز کا معاملہ دنیا بھر کے گلیشیئرز سے مختلف ہے۔ گلیشیئرز کا مطالعہ کرنے والے سائنسدان اس انوکھے معاملے کو ’’قراقرم اناملی‘‘ کا نام دیتے ہیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر