تحفظ حقوق نسواں بل آئین سے متصادم ہے :مولانا عطائ الحق

تحفظ حقوق نسواں بل آئین سے متصادم ہے :مولانا عطائ الحق

صوابی( بیورورپورٹ)نائب امیر جے یو آئی صوبہ خیبر پختونخوا و ضلعی امیر ضلع صوابی مولانا عطاء الحق درویش نے پنجاب حکومت کی جانب سے تحفظ حقوق نسواں قانون کو آئین پاکستان سے متصادم قرار دیتے ہوئے کہا کہ جے یو آئی اسلام کے نام پر بننے والے اس ملک کو سیکو لر بنانے کی تمام سازشیں ناکام بنادے گی۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے یار حسین ضلع صوابی میں درجنوں خاندانوں کا جے یو آئی میں شمولیت کے موقع پر اجتماع سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ جس میں سید جمال ، عرب علی ، محمد حسن ، عزیز الرحمن ، مطلب خان اور دیگر نے خاندانوں اور ساتھیوں سمیت جے یو آئی میں شمولیت کاا علان کیا۔ جب کہ اجتماع سے ضلعی رہنماؤں مولانا محب اللہ عزیزی ، مولانا محمد ہارون حنفی ، مولانا محمد علی ، مفتی نوید ، قاری ثناء اللہ ، مفتی شکیل ، ناصر آمین ، حاجی آمین اور راج ولی خان نے بھی خطاب کیا۔ مولانا عطاء الحق درویش نے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ جے یو آئی کی 60سالہ یوم تاسیس بھر پور انداز میں منائی جائے گی۔ اس سلسلے میں چوبیس مارچ کو تحصیل ٹوپی میں جے یو آئی ضلع صوابی کے زیر اہتمام ساٹھ سالہ یوم تاسیس جمعیت کانفرنس منعقد ہو گی۔ جس میں صوبائی امیر مولانا گل نصیب خان ، مرکزی رہنما سینیٹر مولانا عطا ء الرحمن اور سیکرٹری جنرل مولانا شجا ع الملک سمیت دیگر رہنما شرکت کرینگے۔ انہوں نے ممتاز قادری کی پھانسی کی شدید مذمت کر تے ہوئے کہا کہ حکومت نے ان کو پھانسی دے کر مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچا دیا ہے۔ ہر مسلمان رسولﷺ کی شان میں گستاخی برداشت نہیں کر سکتا ہے اور اس کے لئے کسی بھی قر بانی سے دریغ نہیں کرینگے انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی مخلوط حکومت صوبے میں امن ، بے روزگاری ، غربت ، لوڈ شیڈنگ اور دیگر عوامی مسائل حل کر نے میں بُری طرح ناکام ہو چکی ہے اور حکومت کے تمام دعووے دھرے کے دھرے رہ گئے ہیں جب کہ تجاویزات کے نام پر غریب لوگوں کے مکانات اور دکانوں کو مسمار کر دیا گیا تجاوزات کے آڑ میں عوام دشمن پالیسی اختیار کر کے صوبائی حکومت نے عوام کا جینا محال کر دیا #

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر