پاکستان جغرافیائی لحاظ سے اہم ترین اور قدرتی وسائل سے مالا مال ملک ہے :صاحبزادہ ہارون الرشید

پاکستان جغرافیائی لحاظ سے اہم ترین اور قدرتی وسائل سے مالا مال ملک ہے ...

مہمند ایجنسی ( نمائندہ پاکستان) مہمند ایجنسی، فاٹا آپریشن متاثرین کے ہڑپ ہونے والے اربوں روپے سمیت کرپشن کی نذر ہونے والی قومی فنڈز واپس لی جائے۔ پاکستان جغرافیائی لحاظ سے دنیا کا اہم ترین اور قدرتی وسائل سے مالا مال اسلامی دنیا کا واحد ایٹمی طاقت کا حامل ملک ہے۔ کرپشن اور ناانصافی نے عوام کو مایوسی کی دلدل میں دھکیل دیا ہے۔ بڑے سیاستدان اور بیوروکریسی کی بدعنوانیوں سے بین الاقوامی قرضوں کے اربوں روپے ان کے بیرونی ملک ذاتی اکاؤنٹس میں چلے جاتے ہیں۔ جماعت اسلامی ملک کی واحد جماعت ہے جو کرپشن اور رشوت کی سکینڈلز سے پاک ہے۔ یوتھ ممبر شپ اور کرپشن فری پاکستان مہم سے جماعت اسلامی کی مقبولیت میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ فاٹا متاثرین کی اربوں روپے کرپشن کے ذمہ داران کو قرار واقعی سزا دی جائے۔ ان خیالات کا اظہار جماعت اسلامی فاٹا کے امیر صاحبزادہ ہارون الرشید نے جنرل سیکرٹری فاٹا ڈاکٹر منصف خان اور مہمند ایجنسی امیر محمد سعید خان کے ہمراہ اتوار کے روز مرکز اسلامی میاں منڈی میں نیوز کانفرنس اور اکرکان کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان قدرتی وسائل سے مالا مال ایٹمی قوت کا حامل ملک ہے۔ مگر بد قسمتی سے ملک میں بدامنی ، مہنگائی اور بنیادی ضروریات کی کمی جیسے بڑے مسائل میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے۔ جس کی بنیادی وجہ رشوت، مالی خرد برد اور بڑے بڑے سیاستدانوں اور بیوروکریسی کا ملکی وسائل پر قبضہ ہے۔ صاحبزادہ ہارون لارشید نے کہا کہ آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کے بڑے بڑے قرضے کرپشن کی نذر ہو کر ملک مقروض ہوتا جا رہا ہے۔ نیب اور قومی احتساب کے اداروں کے بھی خاطر خواہ نتائج نہیں نکلے ہیں۔ صوبہ خیبر پختونخواہ کے سابقہ وزیر اعلیٰ کا ایک مشیر کروڑوں روپے کرپشن کا اعتراف کر کے نیب سے 26 کروڑ روپے میں ڈیل کیلئے تیار ہو چکا ہے۔ جبکہ فاٹا کے آپریشن متاثرین کیلئے ملنے والے اربوں روپے FDMA کا حاضر سروس ڈائریکٹر ارشد خان اور ان کے ٹیم نے ہڑپ کی۔ جو اب بھی نیب کی حراست میں ہے۔ اس کے علاوہ پاکستان کے بڑے بڑے سیاستدانوں کے اربوں روپے کے کئی سکینڈلز سامنے آچکے ہیں۔ مگر جماعت اسلامی ملک کی واحد سیاسی جماعت ہے جس کی 70 سالہ سیاسی تاریخ میں کوئی کرپشن نہیں ہوئی ہے۔ اس لئے موجودہ وقت میں جماعت اسلامی نے کرپشن فری پاکستان اور یوتھ ممبر شپ مہم شروع کر رکھی ہے جو کہ ایک ماہ تک جاری رہے گی۔ اور عوام میں اس حوالے سے شعور بیدار کیا جائیگا کہ آئندہ کیلئے کرپٹ سیاستدانوں اور سیاسی جماعتوں کو مسترد کر کے اہل اور اقامت دین کے نام پر قائم جماعت اسلامی کو حکومت کا موقع دے تاکہ کرپشن کی ناسور کو جڑ سے اُکاڑ کر بے انصافی کا خاتمہ کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو وہی سیاسی پارٹی مشکلات سے نکال سکتی ہے۔ جو خود کرپشن سے پاک ہو۔ انہوں نے کہا کہ یوتھ ممبر شپ میں فاٹا کے 2 لاکھ جوانوں کی شمولیت متوقع ہے جو بے انصافی اور بد عنوانی کے خاتمے کیلئے جماعت اسلامی کے بازو بنیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کرپشن فری پاکستان مہم کی پذیرائی کو دیکھتے ہوئے مرکزی امیر سراج الحق کاروان مہم کا آغاز کراچی سے شروع کرینگے۔ جو ملک کے ہر تحصیل ہیڈ کوارٹر جا کر وہاں پر جلسے منعقد کریگی اور عوامی شعور اُجاگر کر کے اہل اور رشوت خوری سے پاک قیادت کی ترغیب دے گی۔ اجتماع سے اسلامی جماعت طلباء پاکستان کے ناظم مہمند ایجنسی عمار یاسر نے بھی خطاب کیا اور جوانوں سے یوتھ ممبر شپ میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی اپیل کی۔

مزید : کراچی صفحہ آخر