حکومت تعلیمی پالیسی مستقل بنیادوں پر لاگو کرے ،اکرام داؤزئی

حکومت تعلیمی پالیسی مستقل بنیادوں پر لاگو کرے ،اکرام داؤزئی

پشاور( پ ر) حکومت تعلیمی اداروں میں دس سالہ تعلیمی پالیسی مستقل بنیادوں پر لاگو کریں آئے روز نئی نئی تعلیمی پالیسیوں نے تعلیم کا حلیہ بگاڑ دیا ہے آئے روز نئی نئی تجربات ہورہے ہیں کبھی پنجم کا امتحان میں روبدل تو کبھی مڈل کبھی ایل سی پوسٹوں کا اجراء کبھی انتظامی پوسٹوں کا اجراء ،قوم کے اربوں روپے کا غذات اور تجربات پر خرچ کئے جارہے ہیں ان خیالات کا اظہار ایٹا کے رہنماء اکرام داؤدزئی نے گذشتہ روز طفیل محمد کی رہائش گاہ پر اساتذہ کے کثیر تعداد سے خطاب کے دوران کیا اس موقع پر طفیل محمد نے کہا کہ اساتذہ کو معاشی لحاظ سے ذہنی مریض بنادیا گیا ہے ڈرانے دھمکانے کی پالیسی نے محکمہ تعلیم میں مایوسی پھیلادی ہے انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ تعلیم پر اربوں روپے خرچ ہورہے ہیں مگر طلباء اور اساتذہ کیلئے کوئی ریلیف نہیں قاضی علاؤ الدین نے کہا کہ محکمہ تعلیم میں سیاسی مداخلت بند کی جائے ایس این جی ڈی کے قوانین کو نظر انداز کرکے قانون اورمیرٹ کی دھجیاں اڑائی جارہی ہیں اساتذہ کے الیکشن میں ردوبدل اورتاخیر کرنا بھی خلاف قانون ہے آخر میں اکرام داؤد زئی نے کہا بہت جلد وزیر اعلیٰ ہاؤس اوربنی گالہ کے دروازوں پر دستک دینے محکمہ تعلیم سے ظلم ،جبر اور اقرباء پروری کیخلاف آواز بلند کرتے رہنگے کسی کو بھی اساتذہ کے حقوق پر ڈاکہ ڈالنے کی اجازت نہیں دیں گے ۔

مزید : کراچی صفحہ آخر