ڈاکٹر سلیمان کے قاتلوں کو قرارواقعی سزاد ی جائے ،ضلعی نائب ناظم

ڈاکٹر سلیمان کے قاتلوں کو قرارواقعی سزاد ی جائے ،ضلعی نائب ناظم

تورڈھیر(نمائندہ خصوصی) موضع مانکی کے ڈاکٹر سلمان شہزاد کو ایک کروڑ روپے تاوان کیلئے اغوا کیا گیاتھا، اغوا کاروں کا مطالبہ تسلیم نہ ہونے پر بڑی بے دردی سے قتل کرکے نعش بہرام کلے(رسالپور) کے قریب پھینکی گئی، مقتول ڈاکٹر کے قاتلان انکے قریبی دوست نکلے جوگرفتاری کے بعد اعتراف جرم کرگئے ہیں، ملزمان کو فوری طور تختہ دار پر لٹکایا جائے، ملزمان کا سراغ لگوانے اور ایک ہفتہ کے اندراندر گرفتار ی عمل میں لانے پر آئی جی پی خیبرپختونخواہ ، سی ٹی ڈی ڈیپارٹمنٹ اورمیڈیاکوبھی خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار اصلاحی جرگہ مانکی (صوابی) کے زیر اہتمام منعقدہ تعزیتی پریس کانفرنس سے ضلعی نائب ناظم عصرخان، ملک درویش، فرحان، غفور خان، شادعلی، نظار استاد، عادل،جاوید، قاضی محمد شعیب اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کیا ہے اس موقع پر گوہر،محمد حسین، نثار ماما، محمودالحسن، فقیر حسین، ایازخان اورمحمد زیب بھی موجود تھے انہوں نے مزید بتایا ہے کہ ملزم ڈاکٹر احمد علی مقتول ڈاکٹر سلمان شہزادکے قریبی دوست تھے جس نے دیگر ملزمان ڈاکٹر انور، ڈاکٹر اشفاق اور ایک لیبارٹری ٹیکنیشن حبیب الرحمن سے ملکر مقتول ڈاکٹر کو اغواکرکے ایک کروڑ روپے تاوان مانگنے لگے ملزمان کا مطالبہ فوری تسلیم نہ ہونے پر ڈاکٹر سلمان شہزاد کو قتل کرکے ارتکاب جرم کے بعد فرار ہوئے جنہیں آئی جی پی ناصر خان درانی کی خصوصی کاوشوں اور CTD ڈیپارٹمنٹ کی دیانتدارانہ انوسٹی گیشن کے نتیجہ میں جلد گرفتار کیا جاسکاواضح رہے کہ مقتول نوجوان ڈاکٹر کی وقوعہ سے چند روز قبل منگنی بھی ہوئی تھی اصلاحی جرگہ مانکی کے عہدیداروں اور منتخب بلدیاتی نمائندوں نے ملزمان کو جلد ازجلد کیفر کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کیا۔

مزید : کراچی صفحہ آخر