پنجاب اسمبلی ،نواز شریف کی صحت کے معاملے پر مسلم لیگ (ن) کی ہنگامہ آرائی اجلاس کا بائیکاٹ

پنجاب اسمبلی ،نواز شریف کی صحت کے معاملے پر مسلم لیگ (ن) کی ہنگامہ آرائی اجلاس ...

لاہور (نمائندہ خصوصی) پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں نوازشریف کے علاج کی معاملے پر حکومت اورمسلم لیگ(ن) آمنے سامنے آ گئیں ،ہنگامہ آرائی اور نعرہ بازی عروج پر رہی، مسلم لیگ ن نے اسمبلی کی سیڑھیوں پر بھی حکومت کے خلاف بھی میدان سجائے رکھا ۔ پنجاب اسمبلی کا جلاس دو گھنٹے پانچ منٹ کی ناخیر سے ڈپٹی سپیکر سردار دوست محمد مزاری کے زیر قیادت شروع ہو۔ اجلاس کے آغاز پر نوازشریف کی بیماری اور علاج کے معاملے پر سابق سپیکر رانا قبال نے نکتہ اعتراض پر کہا کہ تین بار وزیراعظم رہنے والے ملک کو ایٹمی طاقت بنانے والے نواز شریف کو اعلاج کیلئے بیرون ملک جانے نہیں دیا جا رہا۔لیگی رکن خواجہ عمران نذیر نے کہاکہ عمران خان کنٹینر سے گرے تو نواز شریف ان کا حال پوچھنے گئے لیکن کلثوم نواز کے علاج کا مذاق بنایاگیا،ہم ان سے کوئی بھیک نہیں مانگتے، نواز شریف نے علاج کیلئے کوئی درخواست دی نہ دیں گے۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف کا فوری علاج کروایا جائے اوربعدازاں مسلم لیگ(ن) کے اراکین اجلاس کا بائیکاٹ کر کے ایوان سے باہر چلے گئے تاہم جاتے جاتے ن لیگ کے رکن رانا منان کورم کی نشاندھی کر گئے تاہم کورم فوراً پورا کر لیا گیا ،بعدازاں اسمبلی کی سیڑھیوں پر احتجاج کیا اور حکومت مخالف نعرے بازی کی۔لیگی ارکان نے حکومت کے خلاف نعرے بازی کی تو جواب میں حکومتی ارکان بھی ڈٹ گئے اور نوازشریف کے خلاف خوب نعرے لگائے۔وزیر قانون راجہ بشارت نے ایوان میں کہا کہ نوازشریف نے ہسپتال جانے سے انکار کر دیا ہے یہ کیسا انوکھا قیدی مل گیا جو علاج بھی اپنی مرضی کا چاہتا اور قید بھی مرضی کی جگہ پر رہنا چاہتا ہے تاہم سپیکر صاحب ابھی حکم دیں اس ملک کے بہترین ڈاکٹرز سے علاج کروانے کیلئے تیار ہیں کیونکہ ہم نے قواعدو ضوابط کے مطابق چلنا ہے۔ڈپٹی سپیکر نے کہاکہ میرا اور میرے والدکا علاج بھی دو بارپاکستان کے ہسپتال سے ہوا ،پی آئی سی سے میرے والد کا علاج کروایاگیا ،نوازشریف اپنا یہیں سے علاج کروائیں وہ میرا خیال ہے باہر سے علاج کرواناچاہتے ہیں۔میاں اسلم اقبال نے کہا اپوزیشن نوازشریف کی بیماری کو بہانہ بناکر سیاست نہ کرے،مسلم لیگ (ن) کو اپنی سیاسی موت نظر آ رہی ہے اس لئے شورشرابا کررہی ہے۔اجلاس میں وقفہ سوالات میں محکمہ سماجی بہبود و بیت المال کے جوابات متعلقہ وزیر محمد اجمل نے دئیے۔۔ایوان نے میرچاکر خان رند یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی ڈیرہ غازی خان کا بل 2019 اپوزیشن کی غیر موجودگی میں منظور کرلیا۔ایجنڈا مکمل ہونے پر ڈپٹی سپیکر سرداردوست مزاری نے اجلاس آج صبح گیارہ بجے تک ملتوی کر دیا۔

پنجاب اسمبلی

مزید : صفحہ آخر