امریکہ کہے یا بھارت ،ٹھوس شواہد کے بغیر کسی پر پابندی نہیں لگانی چاہیے

امریکہ کہے یا بھارت ،ٹھوس شواہد کے بغیر کسی پر پابندی نہیں لگانی چاہیے

ایم ایم اے کے سنیئر نائب صدرا ور صدر جے یو پی پیر اعجاز ہاشمی نے کہا ہے کہ امریکہ ہو یا پھر بھارت جب تک کسی کے بھی خلاف کوئی ٹھوس شواہد نہ مل جائیں اور ہماری ملکی عدالتوں میں بھی ان ٹھوس شواہد کی بناء پر کوئی چیز ثابت نہ ہو جائے تو تب تک کسی کے بھی کہنے پر کسی بھی مذہبی جماعت یا پھر کسی بھی مذہبی رہنما پر کوئی بھی پابندی نہیں لگنی چاہئے ۔وہ ایشو آف دی ڈے میں گفتگو کررہے تھے ۔انہوں نے کہا کہ جب بھی کوئی حکومت بدلی ہوتی ہے تو وہ امریکہ یا پھر بھارت کے دباؤ میں آکر اپنی مذہبی جماعتوں پر پابندی لگانے جیسے بیانات دینا شروع کردیتے ہیں لیکن ہم حکومت سے کہنا چاہتے ہیں کہ وہ کسی دوسرے ملک کے دباؤمیں آکر کچھ کرنے کی بجائے ان ممالک کے الزامات کی روشنی میں مکمل طور پر اور باریک بینی کے ساتھ تحقیق کر لیں اور جب تک اس تحقیق کے مکمل ہونے تک کوئی ٹھوس چیز سامنے نہ آئے تو تب تک کسی بھی مذہبی جماعت کے رہنما اور جماعت کے خلاف کسی بھی قسم کی کاروائی کرنے سے گریز کیا جائے ۔

مزید : صفحہ اول