تعلیمی اداروں میں یکساں اسلامی نصاب تعلیم کیلئے جدو جہد جاری رکھیں گے ،عبدالقدیر فاروقی

تعلیمی اداروں میں یکساں اسلامی نصاب تعلیم کیلئے جدو جہد جاری رکھیں گے ...

 لاہور(انٹرویو:میاں اشفاق احمد،تصاویر:ایوب بشیر) کلمہ کے لیے بننے والے ملک میں لبرل ازم اور سیکولرازم قبول نہیں ،محمدؐ عربی کا نظام چلے گا،ملکی دفاع کے لیے افواج پاکستان کا کردار قابل ستائش ہے اہل حدیث سٹوڈنٹس فیڈریشن پاکستان کا ایک ایک کارکن پاک فوج کا ہراول دستہ ہے ،پروفیسر ساجد میر اہل پاکستان کے لیے قیمتی اثاثہ ہیں ،تعلیمی اداروں میں یکساں اسلامی نصاب تعلیم کے لیے جدوجہد جاری رکھیں گے،اہل حدیث سٹوڈنٹس فیڈریشن پاکستان کے مرکزی صدر عبد القدیر فاروقی کا روزنامہ پاکستان سے خصوصی انٹرویو میں اظہار خیال،انہوں نے کہا کہ پاکستان میں دین کے اصل بیانیہ کی بنیاد پر صرف اور صرف قرآن و سنت ہے پاکستان لاالہ الہ اللہ کی جاگیر ہے نوجوان نظریہ پاکستان کے احیاء کے لیے متحد و بیدار ہو جائیں کیونکہ روشن منزلوں کا تعین نوجوان ہی کریں گے،انہوں نے کہا کہ کلمہ کے نام پر بننے والے ملک میں لبرل ازم اور سیکولرازم قبول نہیں بلکہ محمدؐ عربی کا نظام چلے گا،مذہبی،سیاسی جماعتوں سمیت پوری قوم ملک کو لبرل بنانے کی کوشش کامیاب نہیں ہونے دے گی،پاکستان میں اسلامی معاشرہ قائم کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے جو اس وقت لبرل ازم یا سیکولرزم کی بات کرے گا وہ آئین پاکستان کا دشمن ہو گا اور شہدائے پاکستان کے زخموں پر نمک پاشی کرے گا،انہوں نے کہا کہ تحریک پاکستان اس وقت تک جاری رہے گی جب تک جغرافیہ مکمل نہیں ہو گا،اور کشمیر پاکستان کا حصہ نہیں بنے گا،عبد القدیر فاروقی نے کہا کہ ملکی دفاع کے لیے افواج پاکستان کا کردار قابل ستائش ہے ،بھارت کے طیارے گرانا اور ان کے پائلٹ کو قیدی بنانا 1965ء کی یاد دلاتا ہے ،انہوں نے کہا کہ اہلحدیث سٹوڈنٹس فیڈریشن پاکستان کا ایک ایک کارکن ملکی دفاع اور اس کی سالمیت کے لیے پاک فوج کا ہراول دستہ ہے ،عبد القدیر فاروقی نے کہا کہ تعلیمی اداروں میں یکساں اسلامی نصاب تعلیم کے لیے جدوجہد جاری رکھیں گے،انہوں نے کہا کہ سکولوں اور کالجز میں ترجمہ قرآن اور مکمل سیرت النبی کو پڑھایا جائے تو نوجوان نسل میں فرقہ ورانہ ہم آہنگی پیدا ہو گی،جو مستقبل میں معاشرے کے لیے مفید ہو گی،انہوں نے کہا کہ اسلامی نصاب تعلیم کے ذریعے مسلم نوجوانوں میں اسلامی اقتدار پروان چڑھتی ہیں اور انتہا پسندی و دہشت گردی کا خاتمہ یقینی ہو گا،انہوں نے کہا کہ اسلامی نصاب رائج کرنے سے امن قائم ہو گا ،فحاشی و عریانی کا خاتمہ ممکن ہو گا اور کہا کہ اسلامی نصاب تعلیم کے ذریعے آج کے نوجوان کا تعلق مسلم ہیروز سے جوڑا جا سکتا ہے ،معاشرے میں طبقاتی نظام تعلیم زہر قاتل کی حیثیت سے رکھتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر