حیدر آباد ، گوٹھ حق نواز جونیجو میں واقع گھر سے 7افراد کی لاشیں بر آمد

حیدر آباد ، گوٹھ حق نواز جونیجو میں واقع گھر سے 7افراد کی لاشیں بر آمد

حیدرآباد(بیورو رپورٹ)حیدرآباد کے علاقے گوٹھ حق نوازجونیجو میں واقع گھر سے7افراد کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں، جاں بحق افراد میں 5بچے، ایک مرد اور خاتون شامل ہیں۔پولیس کے مطابق تمام افراد کی لاشیں دو دن پرانی لگتی ہیں، تاہم حتمی فیصلہ پوسٹمارٹم رپورٹ آنے پر کیا جائے گا،وزیراعلی سندھ نے لاشیں ملنے کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر حیدرآباد اور ڈی آئی جی سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ہے۔تفصیلات کے مطابق حیدر آباد کے تھانہ راہو کی حدود میں واقع حق نواز جونیجو گوٹھ میں ایک گھرسے 7افراد کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں۔ لاشیں اسکول ٹیچر اشرف حیات، ان کی اہلیہ، ایک بیٹا اور 4 بیٹیوں کی ہیں جو 2 روز پرانی ہیں۔علاقہ مکینوں نے لاشیں دیکھ کر پولیس کو اطلاع دی۔ پولیس حکام کے مطابق لاشیں دو دن پرانی ہیں اور میتوں کو سول اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔ مرنے والے تمام افراد کے جسموں پر گولیوں کا کوئی نشان موجود نہیں ہے۔پولیس کے مطابق مرنے والوں میں میاں،بیوی، بیٹے اور4بیٹیاں شامل ہیں۔ ضروری کارروائی کیلئے لاشیں سول اسپتال منتقل کردی گئی ہیں جبکہ متعلقہ گھر کو سیل کردیا گیا ہے۔تفتیشی اہل کاروں کے مطابق گھر سے کھانے پینے کی اشیاء کے نمونے بھی حاصل کرلیے گئے ہیں اور گھر میں موجود سامان کو بھی تحویل میں لے لیا گیا ہے۔ایس ایس پی حیدرآباد سرفراز نواز کے مطابق بجلی نہ ہونے کے باعث اہل خانہ گھر میں جنریٹر چلا کر سوگئے تھے، ہوسکتا ہے کہ دھویں کے باعث دم گھٹنے سے اموات ہوئی ہوں۔ اموات کی ہر پہلو سے تفتیش کی جارہی ہے۔انہوں نے کہاکہ ملنے والی لاشوں میں ماں، باپ، بیٹا اور4 بچیاں شامل ہیں، ابھی تفتیش کر رہے ہیں کہ ہلاکت کی کیا وجہ ہے، آیا یہ ہلاکتیں جنریٹر کی گیس سے ہوئی ہیں یا کوئی اور واقعہ ہے۔دوسری جانب وزیراعلیٰ سندھ نے ٹنڈو جام کے گوٹھ حق نواز جونیجو سے 7 افراد کی لاشیں ملنے کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر حیدرآباد اور ڈی آئی جی سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہاکہ دو دن پہلے کا واقعہ کس کے غفلت سے پیش آیا ہے ، کیا پولیس و انتظامیہ لاعلم تھی۔قاتلوں کی فوری گرفتاری کے لیے خصوصی ٹیم تشکیل دی جائے۔وزیراعلی نے ہدایت کی کہ لاشوں کا پوسٹ مارٹم کراکے سائنٹفیک بنیادوں پر تفتیش کی جائے اورمتاثرہ اہل خانہ کے ورثاء سے ہر قسم کا تعاون کیا جائے۔ وزیراعلی سندھ نے کہاکہ متاثرہ اہل خانہ کو سیکیورٹی کی ضرورت ہو تو فوری فراہم کی جائے

مزید : صفحہ اول