پرویز مشرف کو عدالت نہیں،حکومت نے جانے دیا،چیف جسٹس پاکستان،سابق صدر کیخلاف ٹرائل کیلئے درخواست پرتمام فریقین کو نوٹسز جاری

پرویز مشرف کو عدالت نہیں،حکومت نے جانے دیا،چیف جسٹس پاکستان،سابق صدر کیخلاف ...
پرویز مشرف کو عدالت نہیں،حکومت نے جانے دیا،چیف جسٹس پاکستان،سابق صدر کیخلاف ٹرائل کیلئے درخواست پرتمام فریقین کو نوٹسز جاری

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے سابق صدر پرویز مشرف کیخلاف سنگین غداری ایکٹ کے تحت ٹرائل کیلئے درخواست پر مقدمے کے تمام فریقین کو نوٹسز جاری کر دیئے ۔چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ حکومت نے پرویزمشرف کوبلانے کیلئے کیاکیا؟کہاگیاعدالت نے باہرجانے دیا،عدالت نہیں،حکومت نے پرویزمشرف کوجانے دیا،عدالت نے توحکومت پربات ڈالی تھی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں سابق صدر پرویزمشرف کیخلاف سنگین غداری ایکٹ کے تحت ٹرائل کیلئے لاہور ہائیکورٹ بارکی نظرثانی درخواست پرسماعت ہوئی،چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے سماعت کی۔

دوران سماعت توفیق آصف نے کہا کہ پرویزمشرف ملک سے باہرہیں جس کی وجہ سے ٹرائل رکاہواہے،چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے استفسار کیا کہ حکومت نے پرویزمشرف کوبلانے کیلئے کیاکیا؟۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ کہاگیاعدالت نے باہرجانے دیا،عدالت نہیں،حکومت نے پرویزمشرف کوجانے دیا،عدالت نے توحکومت پربات ڈالی تھی۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ پرویزمشرف کابیان ویڈیولنک کے ذریعے ہوسکتاہے،مشرف پھربھی بیان نہیں دیتے توسمجھاجائےگاکہ انکاری ہیں۔چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیاحکومت کسی ملزم کے ہاتھوں یرغمال بن جائے؟ کوئی ملزم نہ آئے توعدالت بے بس ہوجاتی ہے؟۔

چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ خصوصی عدالت کوفوری کارروائی کاحکم دیاتھا۔

احسن الدین شیخ نے کہا کہ ٹرائل کورٹ میں کوئی کارروائی نہیں ہورہی،عدالت نے کہا کہ مشرف کےخلاف سنگین غداری کامقدمہ درج ہے،مشرف کے ٹرائل کیلئے خصوصی عدالت بنائی گئی،مشرف کے ملک میں نہ ہونے کی وجہ سے ٹرائل رکاہے،عدالت نے کہا کہ اٹارنی جنرل اگلی سماعت پروفاقی حکومت کا جواب جمع کرائے،غیرضروری مقدمات کوزیرالتوانہیں رکھیں گے۔

عدالت نے استفسار کیا کہ وفاقی حکومت بتائے مشرف کی واپسی کیلئے کیااقدامات کئے؟کوئی مجرم چھوٹایابڑانہیں ہوتا،قانون کی نظرمیں سب برابرہیں۔

سپریم کورٹ نے کہا کہ رجسٹرارآفس ٹرائل میں تاخیرکی وجوہات پرمبنی رپورٹ دے،رجسٹرارآفس رپورٹ 15 روزمیں جمع کرائے۔ عدالت نے کہا کہ طے کیاجائےگامشرف جان بوجھ کرعدالت میں پیش نہیں ہورہے؟عدالت نے مقدمے کے تمام فریقین کونوٹسزجاری کر دیئے ۔سپریم کورٹ نے سماعت 25 مارچ تک ملتوی کردی۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد