نواز شریف کی مرضی کے ہسپتال میں علاج کی حکومتی پیشکش قبول کرنے کا فیصلہ کون کرے گا، ارشادبھٹی کی اہم وضاحت

نواز شریف کی مرضی کے ہسپتال میں علاج کی حکومتی پیشکش قبول کرنے کا فیصلہ کون ...
نواز شریف کی مرضی کے ہسپتال میں علاج کی حکومتی پیشکش قبول کرنے کا فیصلہ کون کرے گا، ارشادبھٹی کی اہم وضاحت

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے کہاہے کہ نواز شریف خوش نصیب ہیں کہ روز ان کی بیماری ڈسکس ہوتی ہے ، روز حکومت کی جانب سے ہسپتال منتقل ہونے کی آفرز ہوتی ہیں،؟اب آفر قبول کریں گے یا نہیں کریں گے، یہ فیصلہ نواز شریف خود کریں گے ۔

جیونیوز کے پروگرام ”رپورٹ کارڈ“ میں گفتگو کرتے ہوئے ارشاد بھٹی نے کہا کہ نواز شریف خوش نصیب ہیں کہ روز انہ کی بیماری ڈسکس ہوتی ہے ، روز حکومت کی جانب سے ہسپتال منتقل ہونے کی آفرز ہوتی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ سہولتیں تو جیل کے باہر بھی میسر نہیں ہیں، بیت المال سے پیسے تب پہنچتے ہیں جب کینسر کا مریض مرچکاہوتا ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ مجھے سمجھ نہیں آرہی کہ نواز شریف ایسا کیوں کررہے ہیں؟ کیا وہ بیرون ملک جانا چاہتے ہیں ؟ مان لیتے ہیں کہ یہ پورا نظام نواز شریف کے خلاف ہوگیا تو کیااسلام آباد ہائیکورٹ نے اپنے فیصلے میں نہیں لکھا کہ ایسی طبی سہولتیں جو کسی پاکستانی کومل سکتی ہیں وہ نواز شریف کومل رہی ہیں؟اب آفر قبول کریں گے یا نہیں کریں گے یہ فیصلہ نواز شریف خود کریں گے ۔

مزید : قومی