عورتوں کا عالمی دن منانا چاہئے مگر بے حیائی کا فروغ قبول نہیں، سیاسی و سماجی خواتین رہنما

عورتوں کا عالمی دن منانا چاہئے مگر بے حیائی کا فروغ قبول نہیں، سیاسی و سماجی ...

  



لاہور(دیبا مرزا سے)خواتین کے عالمی دن کو منا نے کا مقصد خواتین کی اہمیت کو اجا گر کرنا ہے،خواتین کو اپنے حقوق کیلئے آواز بلند کر نے کا پورا حق حا صل ہے لہٰذاعورت کے تقدس کو مدنظر رکھ کر ”عورت مارچ“ منا نے میں کو ئی برا ئی نہیں مگر عورت ما رچ کے نا م پر بے حیا ئی کا فروغ کسی طور بھی قابل قبو ل نہیں۔ان خیالا ت کا اظہار ثمینہ خا لد گھرکی، نرگس خا ن، سی ای او سکس سینس گروپ نا زیہ وسیم،جما عت اسلا می کی رہنماء سمعیہ راحیل قاضی، ربیعہ طا رق اورمدیحہ را نا نے خواتین ما رچ کے حوالے سے ردعمل میں کیا۔انہوں نے کہا کہ خواتین کی بھرپور ذہنی نشوونما کیلئے سازگار ماحول دیا جائے،اخلا قیات کے دائرہ کار میں رہ کر اپنے حقو ق کی آ واز کوضرور بلند کر نا چا ہئے تاہم مارچ میں ایسے نعروں اور جملو ں سے پر ہیز کر نا چا ہئے جس سے کسی دوسرے کی دل شکنی ہو۔ثمینہ خا لد گھر کی نے کہا کہ عورت کے تقدس کو مدنظر رکھ کر ”عورت مارچ“ منا نے میں کو ئی برا ئی نہیں۔ سی ای او سکس سینس گروپ نا زیہ وسیم نے کہا کہ عورت ما رچ کے نا م پر بے حیا ئی کا فروغ کسی طور بھی قابل قبو ل نہیں۔انہو ں نے کہا کہ اپنا کا روبار خود کا میا بی سے چلا رہی ہو ں لیکن بطور مسلما ن اور اسلا می ملک کے شہری ہو نے کی حیثیت سے مجھے اپنی اقدا ر کو مد نظر رکھ کر چلنا ہو گا۔جما عت اسلا می سمعیہ راحیل قاضی، ربیعہ طا رق نے کہا کہ موجودہ دور میں عورت کو درپیش مسائل سسٹم کی خرابی ہے آج بھی عورت کیلئے بی بی فاطمہ اور عائشہ رضی اللہ تعالی عنہ جیسی بیٹیاں رول ماڈل ہیں، 8 ما رچ کو خواتین کا عا لمی د ن بھرپو ر طریقے سے منا نا چا ہیے لیکن اخلا قیات کے دائرہ کار میں رہ کر اپنے حقو ق کی آ واز کو بلند کر نا چا ہئے۔مد یحہ را نا نے کہا کہ اسلام نے عورت کو بہت خو بصورت مقام دیا ہے، اپنے حقوق کی آ واز اٹھا نے میں کو ئی برا ئی نہیں لیکن اس مقصد کیلئے صحیح راستہ اختیا ر کر نا چا ہئے۔

خواتین/ردعمل

مزید : صفحہ آخر /رائے /کالم