چین میں پھنسے پاکستانی طلبہ کا معاملہ کابینہ کے سامنے رکھا جائے، اسلام آباد ہائیکورٹ

چین میں پھنسے پاکستانی طلبہ کا معاملہ کابینہ کے سامنے رکھا جائے، اسلام آباد ...

  



اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)اسلام آباد ہائیکورٹ نے کرونا وائرس سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران کہا ہے کہ ڈی جی وزارت خارجہ کابینہ اجلاس میں چین میں پھنسے طلبہ سے متعلق پیش رفت رپورٹ آئندہ سماعت پر پیش کریں،گزشتہ روز کرونا وائرس سے متاثر چینی صوبے میں پھنسے پاکستانیوں کو وطن واپس لانے کی درخواست پر سماعت اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کی،جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ وزیراعظم خود اس معاملے کا دیکھ رہے ہیں اور ریاست غافل نہیں ہے، آپ منفی کیوں سوچ رہے ہیں؟ ہمیں کچھ صبر کا مظاہرہ کرنا چاہیے،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ میرے پیدا ہونے کے بعد پہلی بار دیکھا کہ خانہ کعبہ کو بند کیا گیا ہے، صورت حال گھمبیر ہے، اسی لیے ایسے اقدامات سامنے آ رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ آپ کا درد اور دکھ ہم سمجھ رہے ہیں لیکن یہ ایک لارجر ایشو ہے، وزیراعظم خود آپ کے بچوں کے بارے میں اجلاس کر رہے ہیں،سماعت کے دوران والدین عدالت میں رو پڑے اور کہا کہ ہمارا کوئی احساس کرنے والا نہیں، حکومت کچھ نہیں کر رہی، ہمارا صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا ہے،چیف جسٹس نے کہا عدالت کوئی ایسا حکم جاری نہیں کر سکتی جو قابل عمل ہی نہ ہو، ہمیں اپنی ریاست پر اعتماد کرنا چاہیے،وزارت خارجہ کے نمائندے نے کہا کہ آئندہ منگل کو کابینہ کے اجلاس میں یہ فیصلہ کیا جائے گا،اسلام آباد ہائیکورٹ نے چین سے پاکستانیوں کو لانے کی درخواست کی مزید سماعت 13 مارچ تک ملتوی کر دی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ

مزید : صفحہ اول