ہمارے ہوتے ہوئے کوئی بھی ختم نبوت قوانین میں ترمیم نہیں لا سکتا: اکرم درانی 

ہمارے ہوتے ہوئے کوئی بھی ختم نبوت قوانین میں ترمیم نہیں لا سکتا: اکرم درانی 

  



بنوں (این این آ ئی)اپوزیشن لیڈر خیبرپختونخوا اسمبلی اور رہبر کمیٹی کے چیئرمین اکرم خان دُرانی نے کہا ہے کہ ہمارے ہوتے ہوئے کوئی بھی ختم نبوت قوانین میں ترمیم نہیں لا سکتا اگر کسی نے جرات کی تو پارلیمنٹ میں اس کا مقابلہ ہم اور اور پارلیمنٹ سے باہر دینی مدارس میں پڑھنے والے عاشقان رسول کریں گے دینی مدارس کل بھی اسلام کے قلعے تھے اور آج بھی اسلام کے قلعے اور امن کا درس دینے والے درسگاہیں ہیں  جب تک ہم زندہ ہیں ان کے طرف کوئی میلی آنکھ سے جرات بھی نہیں کر سکتا اوراگر کسی نے ان کی طرف میلی آنکھ سے دیکھنے والوں کی انکھیں نکال دیں گے دینی مدارس دہشت گردی پھیلانے نہیں بلکہ امن کے ضامن ہیں اور یہاں سے جو بھی علم حاصل کر کے نکلتا ہے وہ ملک کا بہترین شہری ہوتا ہے اور ملک کے لئے جان تک پر کھیلنے سے گریز نہیں کرتا دینی مدارس مغرب کی آنکھوں میں کانٹا ہے  اور اس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ یہ لوگ صرف اللہ کی طاقت کو سپریم مانتے ہیں نہ امریکہ کے سامنے جھکنا جانتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے جامع مسجد حافظ کی مدرسہ کے حفاظ ار علماء کرام کی دستاربندی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا جس سے مفتی عظمت اللہ، حاجی محمد نیاز خان بھی خطاب کیا۔اکرم خان درانی نے کہا کہ ہمیں فخر ہے کہ ہم ایسے رسول کے امتی ہیں جس نے پوری انسانیت کی فکر کی ہے انسان تو انسان انہوں نے جانوروں کا بھی خیال رکھا ہے اور اسی فکر اور نظریے کے لئے ہمارے اجداد نے اس ملک کو حاصل کیا لیکن نہایت افسوس سے کہنا پڑ رہا ہے کہ اج اسلام کے نام پر آزاد میں سپریم کورٹ کی ممانعت کے باجود میرا جسم میری میری مرضی کے نعرے لگ رہے ہیں اور خواتین اس لئے مارچ کر رہے ہیں کہ نکاح کو ختم کیا جائے اور آزادی دی جائے لیکن ہم ایسے عناصر کو بتا دینا چاہتے ہیں کہ ابھی اسلام سے محبت کرنے والے زندہ ہیں اور کوئی بھی اس ملک میں مدر پدر آزادی نہیں لا سکتا اور نہ وہ اپنے اقاؤں کے ایجنڈے کی تکمیل کر سکتے ہیں اس موقع پر فارغ تحصیل طلباء کو پگڑیاں پہنائی گئیں۔

اکر م درانی

مزید : صفحہ اول