چائلڈ لیبر کے خاتمہ اور بچوں کے تعلیم میں سہولتوں کی فراہمی اولین ترجیح ہے: شوکت یوسفزئی

چائلڈ لیبر کے خاتمہ اور بچوں کے تعلیم میں سہولتوں کی فراہمی اولین ترجیح ہے: ...

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبرپختونخوا کے وزیر محنت و ثقافت شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ چائلڈ لیبر کے خاتمے، ورکر کے حقوق کے تحفظ اور ان کے بچوں کے حصول تعلیم میں سہولیات پیدا کرنے کے لیے ترجیحی بنیادوں پر کام کیا جائے گا۔ لیبر قوانین کو لاگو کرنے اور کم سے کم اجرت کو یقینی بنایا جائے۔ فیکٹری ورکر اور مزدوروں کی بہتر صحت کے لیے صوبے میں ورکروں کے لیے محکمہ کی طرف سے بنائے گئے خصوصی ہسپتالوں میں سہولیات کی موجودگی لازم ہو۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے محکمہ محنت کی طرف سے دیئے گئے بریفنگ کے دوران کیا۔ بریفنگ میں محکمہ محنت، ایمپلائی سوشل سیکیورٹی انسٹیٹیوٹ، ورکر ویلفیئر بورڈ، ورکر ویلفیئر فنڈ اور دیگر نمائندگان نے شرکت کی۔ صوبائی وزیر کو محکمہ کے طریقہ کار اور کارکردگی پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ شوکت یوسفزئی نے کہا کہ محکمہ محنت غریب مزدوروں اور فیکٹری ورکروں کے حقوق کی پاسداری کرتا ہے محکمہ ان مزدوروں کے مسائل کے حل میں کوئی کوتاہی نا بھرتے اور ٹریڈ اور ورکر یونین و ایسوسی ایشن کے ساتھ ملکر قانون کے مطابق ان کے فلاح وبہبود کے منصوبے جلدی مکمل کرے۔ مزدوروں کی رہائش کے لیے رہائشی منصوبے مکمل کیے جائیں تاکہ مزدوروں کے اپنے گھر کا خواب پورا ہو سکے۔ انہوں نے کہا کہ فیکٹریوں میں بانڈ لیبر کا ہر حال میں خاتمہ ہونا چاہیے اور دوران کام زخمی، فوت یا معذور ہونے والے ورکروں کے کمپنسیشن الاؤنس کا طریقہ کار سہل اور یقینی ہو۔ فیکٹریوں میں مزدوروں کے ساتھ نا انصافی اور کم اجرت دینے والوں کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ صوبائی وزیر نے محکمہ کے ما تحت سکولوں کی کارکردگی کو مزید بہتر بنانے کیلئے ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ سکولوں میں طلباء کے تعداد میں اضافے کے ساتھ ساتھ کوالٹی میں بہتری کے لیے منصوبہ بندی ترجیحی بنیادوں پر کی جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر