اسلام میں عورتوں کے حقوق کی مثال نہیں ملتی،فخر اعظم ایڈوکیٹ

        اسلام میں عورتوں کے حقوق کی مثال نہیں ملتی،فخر اعظم ایڈوکیٹ

  



بنوں (بیوروپورٹ) سابق ایم پی اے فخراعظم ایڈوکیٹ نے کہا ہے کہ اسلام نے چودہ سو سال پہلے عورتوں کو حقوق دیئے ہیں اسلام سے بہتر کوئی مذہب عورتوں کو بہتر حقوق نہیں دے سکتا میرا جسم میری مرضی خواتین کو بے حیائی کی دعوت دینے والا نعرہ ہے پاکستان ایک مہذب اسلامی ملک ہے جسمیں خواتین کو اسلام کے دائرے میں رہتے ہوئے مکمل آزادی حاصل ہے لیکن میرا جسم میری مرضی کے نام پر جو آزادی خواتین کیلئے مانگی جارہی ہے یہ مغربی ایجنڈا ہے اور جب تک ہم زندہ ہیں پاکستان میں کسی کو بھی بے حیائی پھیلانے کی اجازت نہیں دیں گے ان خیلات کا اظہار انہوں نے اخباری نمائندوں سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ حکومت کو چاہیئے کہ وہ بے حیائی پھیلانے والوں کے خلاف ایکشن لیں انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی نے خواتین کو ہر پلیٹ فارم پر مذہب کے دائرے میں حقوق دیئے ہیں یہاں تک کہ اسمبلی فلور پر بھی خواتین کو33فیصد نمائندگی پیپلز پارٹی نے دی ہے بے نظیر بھٹوخود ایک خاتون وزیر اعظم تھی اسی وجہ سے انہوں نے خواتین کے فلاح وبہبو اور تحفظ کیلئے جو اقدامات کئے پاکستان کی پارلیمانی تاریخ میں اسکی مثال نہیں ملتی،انہوں نے کہا کہ ہم کسی بھی ایسے اقدام کی حمایت نہیں کریں گے جس سے خواتین کا تقدس پامال ہو انہوں نے کہا کہ حکومت کو چاہیئے کہ ملک میں بے حیائی پھیلانے والوں کا راستہ روکیں ورنہ عوام خود بے حیائی کا راستہ روکنے کیلئے میدان میں نکلیں گے،

مزید : پشاورصفحہ آخر