ایشیا کپ کا میز بان پاکستان مگر نیوٹرل مقام پر کروانا پڑ یگا: احسان مانی

    ایشیا کپ کا میز بان پاکستان مگر نیوٹرل مقام پر کروانا پڑ یگا: احسان مانی

  



لاہور(سپورٹس رپورٹر)پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی)کے چیئرمین احسان مانی نے کہا ہے کہ ایشیا کپ کا میزبان پاکستان ہی ہے مگرایشیا کپ ہمیں نیوٹرل وینیو پر کروانا پڑے گا،پی سی بی نے پی ایس ایل میں کسی غیرملکی پلیئر کو پاکستان آنے کیلئے اضافی قیمت ادا نہیں کی، وسیم خان کو انگلینڈ کرکٹ بورڈ کی طرف سے پیشکش تھی،انہیں انگلش کرکٹ بورڈ کے سربراہ کیلئے شارٹ لسٹ بھی کرلیا گیا تھا لیکن پاکستان کی محبت انہیں پاکستان کھینچ لائی،دنیا میں کوئی ایسا بورڈ نہیں جو اسٹیڈیم بھی چلائے،پاکستان کرکٹ بورڈ واحد بورڈ ہے جو سٹیڈیم بھی چلا رہا ہے جوبہت بڑا بوجھ ہے،چاہتے ہیں کہ مضبوط ایسوسی ایشنز بنائیں تاکہ مستقبل میں اسٹیڈیم کی ذمہ داری ایسوسی ایشن کے سپرد کریں۔اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ پاکستان سپر لیگ پاکستان میں کرنا ایک بہت بڑا چیلنج تھا،پی سی بی نے چھوٹے قدموں سے پاکستان سپر لیگ کا پوری طرح انعقاد پاکستان میں کروایا،ہمارے لئے چیلنج تھا کہ پاکستان میں دس سال سے انٹرنیشنل کرکٹ نہیں ہو رہی تھی،ہماری کوشش ہے کہ اگلے سال پشاور میں پی ایس ایل کھیلا جائے،وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پر پاکستان سپر لیگ پوری طرح پاکستان میں لائے،صرف کرکٹ ہی نہیں بلکہ پاکستان میں دیگر سپورٹس کے لیے بھی کام کرنا ہوگا،ایشیاکپ بھارت یا پاکستان کا نہیں بلکہ تمام ایشن کرکٹ کونسل کے ممبران کا معاملہ ہے،ایشیاکپ کی میٹنگ کرونا وائرس کی وجہ سے ایک مہینے کے لیے تاخیر کا شکار ہوگئی ہے،اگر بھارت کے ساتھ سیریز ہوتی تو میں ضرور زور دیتا کہ بھارت پاکستان آکر کھیلے،احسان مانی نے کہا کہ ایشیا کپ کا میزبان پاکستان ہی ہے تاہم ایشیا کپ ہمیں نیوٹرل وینیو پر کروانا پڑے گا، اگرایشیا کپ کی میزبانی پاکستان میں کروانے کی ضد رکھی تو بھارت نہیں آئے گا، بھارتی کرکٹ بورڈ جو مرضی کہے ہمیں اس کی پروا نہیں۔انہوں نے کہا کہ ویسٹ انڈیز ٹیم کو پاکستان لانے کے لیے ماضی میں ہرکھلاڑی کو 25, 25 ہزارڈالرز ادا کیے گئے تاہم آج پی سی بی نے کسی غیرملکی پلیئر کو پاکستان آنے کے لیے اضافی قیمت ادا نہیں کی۔انہوں نے کہا کہ وسیم خان کو انگلینڈ کرکٹ بورڈ کی طرف سے پیشکش تھی،انہیں انگلش کرکٹ بورڈ کے سربراہ کیلئے شارٹ لسٹ بھی کرلیا گیا تھا لیکن پاکستان کی محبت انہیں پاکستان کھینچ لائی۔انہوں نے کہا کہ کرکٹ انٹرنیشنل گیم ہے،کیا آپ کو پتا ہے زمبابوے کرکٹ بورڈ کیچیئرمین ایک پاکستانی تھے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا مستقبل میں منصوبہ ہے کہ مضبوط ایسوسی ایشن بنائیں جن کا زور اپنے سٹیڈیم پر ہو،دنیا میں کوئی ایسا بورڈ نہیں جو اسٹیڈیم بھی چلائے،پاکستان کرکٹ بورڈ واحد بورڈ ہے جو سٹیڈیم بھی چلا رہا ہے،یہ ایک بہت بڑا بوجھ ہے،ہم چاہتے ہیں کہ مضبوط ایسوسی ایشنز بنائیں تاکہمستقبل میں اسٹیڈیم کی ذمہ داری ایسوسی ایشن کے سپرد کریں گے،جس صوبے کا گراؤنڈ ہو، اسی کو اسکا فائدہ ہو۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی