دبئی کے حکمران شیخ راشد المکتوم کی 6 شادیاں، بچے کتنے ہیں؟ زندگی کی حیران کن تفصیلات سامنے آگئیں

دبئی کے حکمران شیخ راشد المکتوم کی 6 شادیاں، بچے کتنے ہیں؟ زندگی کی حیران کن ...
دبئی کے حکمران شیخ راشد المکتوم کی 6 شادیاں، بچے کتنے ہیں؟ زندگی کی حیران کن تفصیلات سامنے آگئیں

  



دبئی(مانیٹرنگ ڈیسک) دبئی کے 70سالہ حکمران شیخ محمد بن راشد آل مکتوم کی ایک وجہ شہرت دبئی کی اصلاحات کا بیڑا اٹھانا اور اسے امیر ترین بین الاقوامی میگا سٹی بنانا ہے۔ تاہم گزشتہ دو سال سے وہ انسانی حقوق کی مبینہ خلاف ورزیوں کے حوالے سے بین الاقوامی میڈیا کی سرخیوں میں ہیں۔ پہلے ان کی ایک بیٹی نے ملک سے فرار ہونے کی کوشش کی اور پھر ان کی سب سے چھوٹی اہلیہ اپنے بچوں سمیت فرار ہو کر برطانیہ چلی گئیں اور طلاق کے لیے عدالت سے رجوع کر لیا۔ میل آن لائن کے مطابق شیخ محمد نے کل 6شادیاں کیں۔ ان کی پہلی شادی 1979ءمیں ان کی کزن شیخہ ہند بنت مکتوم بن جمعہ آل مکتوم سے ہوئی۔ ہند بنت مکتوم کی عمر اس وقت 17سال تھی اور وہ شیخ محمد سے کم و بیش 13سال چھوٹی تھیں۔ ان کے بطن سے شیخ محمد کے 12بچے پیدا ہوئے۔ وہی دبئی کی خاتون اول ہیں۔

ہند بنت مکتوم کے بعد شیخ محمد نے دو لبنانی خواتین شیخہ ریندا بنت محمد آل بینا اور شیخہ دیلیلہ علولہ کے ساتھ شادیاں کیں۔ ان کی چوتھی شادی الجیرین نژاد شیخہ حوریہ بنت احمد المساح سے ہوئی جو شہزادہ لطیفہ کی والدہ ہیں۔ یہ وہی شہزادی ہیں جنہوں نے ملک سے فرار ہونے کی کوشش کی تاہم انہیں بحر ہند میں پکڑ لیا گیا اور واپس متحدہ عرب امارات پہنچا دیا گیا جس کے بعد سے ان کے متعلق کوئی خبر نہیں آئی۔ شیخ محمد نے پانچویں شادی یونانی نژاد زوئی گریگوراکوس نامی خاتون سے کی۔ شیخ محمد کی یہ تمام پانچوں بیویاں کبھی منظرعام پر نہیں آئیں لیکن ان کی چھٹی بیوی شہزادی حیاءبنت حسین شروع سے ہی منظرعام پر رہیں۔ وہ شیخ محمد سے عمر میں 25سال چھوٹی تھیں۔ وہ اپنے شوہر کے ہمراہ تقریبات میں بھی شریک ہوتی تھیں۔ تاہم وہ عالمی میڈیا کی نظروں میں اس وقت آئیں جب وہ اپنے بچوں 11سالہ شہزادی جلیلہ اور 7سالہ شہزادہ زید کے ہمراہ متحدہ عرب امارات سے فرار ہو کر برطانیہ گئیں۔

شہزادی حیاءکا تعلق اردن کے شاہی خاندان سے ہے۔ شہزادی حیاءاردن کے بادشاہ حسین اور ان کی تیسری اہلیہ ملکہ عالیہ کی بیٹی ہیں۔ انہوں نے آکسفورڈ سے فلسفے، سیاست اور معاشیات کی تعلیم حاصل کی اور 29سال کی عمر میں 2004ءمیں ان کی شادی شیخ محمد کے ساتھ ہوئی۔ اس وقت برطانوی عدالتوں میں شیخ محمد اور شہزادی حیاءکے درمیان طلاق اور بچوں کی حوالگی کے مقدمات چل رہے ہیں۔شہزادی حیاءنے فرار ہونے کی وجہ بیان کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے بچوں کو اس اندوہناک مستقبل سے بچانا چاہتی تھیں جس سے شہزادی لطیفہ اور شہزادی شمسہ دوچار ہوئیں۔ شہزادی شمسہ بھی شیخ محمد کی صاحبزادی ہیںجو برطانیہ میں فیملی کے ساتھ چھٹیاں منانے گئیں اور وہاں فرار ہو گئیں۔ بعد ازاں انہیں کیمبرج سے پکڑ لیا گیا اور واپس متحدہ عرب امارات پہنچا دیا گیا۔ اس کے بعد سے شہزادی لطیفہ کی طرح ان کے متعلق بھی کوئی خبر سامنے نہیں آئی۔

مزید : عرب دنیا