خود کو پیغمبر کہہ کر 6 خواتین اور 1مرد کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والا شخص

خود کو پیغمبر کہہ کر 6 خواتین اور 1مرد کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والا شخص
خود کو پیغمبر کہہ کر 6 خواتین اور 1مرد کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والا شخص

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک خودساختہ پیغمبر کو 6خواتین اور ایک مرد کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے جرم میں34سال قید کی سزا سنا دی گئی۔ میل آن لائن کے مطابق یہ 60سالہ مائیکل اولرونبی نامی شخص نائیجیرین نژاد تھا اور برمنگھم میں مقیم تھا جہاں اس کذاب نے اپنے پیغمبر ہونے کا دعویٰ کیا اور لوگ اس کے معتقد ہونے لگے۔ اس نے گزشتہ 20سال سے یہ دھندہ چلا رکھا تھا اور اس کے پیروکاروں کی تعداد سینکڑوں میں تھی۔

یہ کذاب اپنے پیروکاروں کو روحانی غسل دلاتا تھااور اسی غسل کے دوران انہیں جنسی زیادتی کا نشانہ بناتا تھا۔ یہ دعویٰ کرتا تھا کہ اس روحانی غسل سے لوگوں کی روحیں پاک ہو جاتی ہیں۔ اسے گرفتار کرکے برمنگھم کراﺅن کورٹ میں پیش کیا گیا تھا جہاں اس کے خلاف جنسی زیادتی کے 88الزامات ثابت ہوئے۔ فیصلہ سناتے ہوئے جج سارا بکنگھم کا کہنا تھا کہ ”اس روحانی غسل کا اصل مقصد مجرم کی جنسی ہوس کو تسکین پہنچانا تھا۔ “ رپورٹ کے مطابق اس کذاب کے ساتھ اس کی بیوی جولیانا پر بھی مقدمہ چلایا گیا جو اس کے جرائم میں شراکت دار تھی۔ اسے 11سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

مزید : برطانیہ