یوسی 134،ٹاﺅن شپ پانی کی شدید قلت ،سیوریج سسٹم ناکارہ ،رہائشی سراپااحتجاج

یوسی 134،ٹاﺅن شپ پانی کی شدید قلت ،سیوریج سسٹم ناکارہ ،رہائشی سراپااحتجاج
یوسی 134،ٹاﺅن شپ پانی کی شدید قلت ،سیوریج سسٹم ناکارہ ،رہائشی سراپااحتجاج

  

لاہور (چودھری حسنین/ الیکشن سیل) یونین کونسل 134 میں واقع ٹاﺅن شپ کے رہائشی پینے کے پانی کی عدم دستیابی ،بجلی، گیس کی لوڈشیڈنگ سیوریج کے ناقص سسٹم کی وجہ سے سراپا احتجاج بن گئے، آئندہ آنے والے امیدواروں کو اپنے مطالبات پورے کروائیں گے۔ تفصیلات کے مطابق حاکم علی نے بتایا ہے کہ ہمارے علاقے میں پینے کا پانی ناپید ہو چکا ہے۔بجلی کی لوڈشیڈنگ کی وجہ سے لوگوں کو پانی نہیں مل رہا۔ جس کی وجہ سے زندگی مشکل نظر آ رہی ہے۔ آصف شاہ نے بتایا ہے۔ بجلی کی لوڈشیڈنگ نے زندگی اجیرن کرکے رکھ دی ہے۔ نہ صبح کو سکون ملتا ہے نہ رات کو آرام پتہ نہیں اس عذاب سے کب نجاب حاصل ہو گی۔ آنے والی حکومت بھی آئندہ تین سال تک کا وقت مانگ رہی ہے۔ اس کے بعد ہی پتہ چل سکتا ہے کہ پاکستان کا کیا بنے گا۔ پچھلی حکومت نے تو عوام کا خون ہی چوس لیا تھا۔ اب آئندہ آنے والی کا کیا ارادہ بنتا ہے۔ پتہ نہیں۔ محمود رشید نے بتایا ہے کہ یہاں کے سیوریج کے بند ہونے کے بارے میں کئی بار شکایات کیں مگر واسا والوں کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی۔ آتے ہیں سیوریج کھول کر چلے جاتے ہیں نہ اس کی صفائی کرتے ہیں اور نہ ہی اندر سے گند وغیرہ نکالتے ہیں۔ جس کی وجہ سے بار بار سیوریج بند ہو جاتا ہے۔ رانا راشد نے کہا ہے کہ اس مرتبہ ہم اپنے مطالبات منوانے کے بعد ہی الیکشن میں ووٹ کاسٹ کریں گے۔ اس کے بغیر الیکشن سے ہی بائیکاٹ کر دیں گے۔

مزید :

الیکشن ۲۰۱۳ -